Wednesday, October 5, 2022

خواتین کو وراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لینا ہو گا، سپریم کورٹ

خواتین کو وراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لینا ہو گا، سپریم کورٹ
September 23, 2021 ویب ڈیسک

اسلام آباد (92 نیوز) سپریم کورٹ نے خواتین کی وراثت کے حوالے سے بڑا فیصلہ جاری کر دیا۔ سپریم کورٹ نے قرار دیا کہ خواتین کو وراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لینا ہو گا۔

خواتین زندگی میں اپنا حق نہ لیں تو انکی اولاد دعویٰ نہیں کر سکتی۔ سپریم کورٹ نے پشاور کی رہائشی خواتین کے بچوں کا نانا کی جائیداد میں حق کا دعویٰ مسترد کر دیا۔

جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سماعت کی۔ دوران سماعت جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ قانون وراثت میں خواتین کے حق کو تحفظ فراہم کرتا ہے۔ عیسیٰ خان نے 1935 میں اپنی جائیداد بیٹے عبدالرحمان کو منتقل کر دی تھی۔ عیسیٰ خان نے اپنی دونوں بیٹیوں کو جائیداد میں حصہ نہیں دیا تھا۔ دونوں بہنوں نے اپنی زندگی میں وراثت نامہ کو چیلنج نہیں کیا تھا۔ دونوں خواتین کے بچوں نے 2004 میں نانا کی وراثت میں حق دعوی دائر کیا تھا۔ سول کورٹ نے بچوں کے حق میں فیصلہ دیا تھا جسے ہائیکورٹ نے کالعدم قرار دیا۔

سپریم کورٹ نے پشاور ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرار رکھا۔