Tuesday, January 18, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

حوالدار لالک جان  کی شہادت کو 18 برس بیت گئے

حوالدار لالک جان  کی شہادت کو 18 برس بیت گئے
July 7, 2017

اسلام آباد(92نیوز)مادر وطن پر جب بھی مشکل وقت آیا تو اِس کے جری و بہادر بیٹے ہمیشہ سینہ سپر رہے۔ حوالدار لالک جان شہید نشان حیدر کا شمار بھی وطن کے اُن نڈر سپاہیوں میں ہوتا ہے جنہوں نے جان کی پرواہ کیے بغیر وطن کی حرمت کو دشمن کے ناپاک سائے سے محفوظ رکھا ۔

تفصیلات کےمطابق وادی یسین’ ضلع غذر’ گلگت بلتستان ۔ یکم اپریل 1967ء کو آنکھ کھولنے والا لالک جان پاکستان کا نڈر اور جری سپوت ۔ 1999ء کی کارگل جنگ میں جرات و بہادری کے ایسے جوہر دکھائے کہ دشمن حیران رہ گیا ۔

کارگل کا محاذ اور دشمن کے مکروہ عزائم میس حوالدار لالک جان نے دشمن کیخلاف رضاکارانہ خدمات پیش کر دیں۔ اپنی یونٹ 12 ناردن لائٹ انفنٹری پہنچے ۔ کیپٹن کرنل شیر خان کیساتھ جنگ میں شریک ہوئے ۔ حکم ملا تو درجن بھر ساتھیوں کیساتھ مشکوہ نلہ کی پوسٹ پر بحیثیت پوسٹ کمانڈر ذمہ داری سنبھالی ۔

حوالدار لالک جان اور اُن کے ساتھی 2 سے 6 جولائی تک دشمن کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بنے رہے ۔ حملوں میں تیزی پر لیفٹیننٹ وسیم کو تازہ دم کمک کیساتھ مشکوہ نلہ چوکی پر پہنچنے کا حکم ملا ۔ اس دوران چوکی پر 10 سے زائد ساتھی شہید جبکہ حوالدار لالک اور سپاہی بشیر شدید زخمی ہو چکے تھے لیکن چوکی چھوڑنے پر تیار نہ تھے۔ حوالدار لالک جان نے کئی گھنٹے ہلکی مشین گن سے دشمن کو بھاری نقصان پہنچایا ۔ منفی 30 درجہ حرارت یخ بستہ ہواﺅں اور جان لیوا زخموں کے باوجود کمال جرات کا مظاہرہ کرتے رہے ۔

7 جولائی 1999ء کو دفاع وطن کے عظیم فریضہ کی انجام دہی میں پاک فوج کا یہ بہادر سپوت جام شہادت نوش کر گیا۔ حوالدار لالک جان کی بہادری و شجاعت کے اعتراف پر انہیں نشان حیدر سے نوازا گیا ۔