Friday, January 21, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

حسین نواز نے شریف اور قطری خاندان کے درمیان کاروباری شراکت سے متعلق دستاویزات جے آئی ٹی کو جمع کرادیں

حسین نواز نے شریف اور قطری خاندان کے درمیان کاروباری شراکت سے متعلق دستاویزات جے آئی ٹی کو جمع کرادیں
July 7, 2017

 

اسلام آباد(92نیوز)وزیراعظم کے صاحبزادے حسین نواز نے شریف اور قطری خاندان کے درمیان کاروباری شراکت داری،حدیبیہ پیپرز ملز قرضے کی آڈٹ رپورٹ اور آف شور کمپنیوں نیلسن اور نیسکول سے متعلق دستاویزات جے آئی ٹی میں جمع کرادیں۔ 136 صفحات پر مشتمل دستاویزات کی فہرست 92 نیوز نے حاصل کرلی۔

تفصیلات کےمطابق حسین نواز نے جے آئی ٹی میں کون کون سی دستاویزات جمع کرائیں؟  ۹۲نیوز نے پتہ چلا لیا حسین نواز کی جانب سے جمع کرائے گئے تحریری جواب کی کاپی کی ابتدائی فہرست کے مطابق حسین نواز کا جواب 136 صفحات پر مشتمل ہے، جواب کیساتھ سینکڑوں صفحات کے 22 منسلکہ جات بھی شامل ہیں۔

جواب میں حسن اور حسین نواز کا سپریم کورٹ میں جمع کرایا گیا تحریری بیان بھی شامل ہے، تین صفحات پر مشتمل قطری شہزادے حمد بن جاسم کا پروفائل بھی جمع کرایا گیا ہے جبکہ حمد بن جاسم کا 22 دسمبر 2016 کا خط بھی جواب کیساتھ جمع کرایا گیا ہے، طارق شفیع کا بیان حلفی بھی حسین نواز کے جواب میں موجود ہے۔

حسین نواز کی جانب سے دبئی فیکٹری کی فروخت کی دستاویزات بھی جمع کرائی گئی ہیں،، عزیزیہ اسٹیل ملز کا سیل پرچیز ایگریمنٹ اور میاں شریف اور قطری خاندان کی کاروباری سیٹلمنٹ کی دستاویزات بھی جے آئی ٹی میں جمع کرائی گئی۔ التوفیق بینک سے حدیبیہ پیپرز ملز کیلیے قرضے سے متعلق آڈیٹرز کی دو رپورٹس بھی جواب کا حصہ ہیں جبکہ منروا کی نیلسن اور نیسکول کے ٹرسٹی کے طور پر تقرری سے متعلق قانونی خط و خطابت اور ٹرسٹی کی تقرری سے متعلق برطانوی قانونی فرمز کا جواب بھی جمع کرایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ بھی کئی ایک دستاویزات جواب کیساتھ جمع کرائی گئی ہیں۔