Tuesday, January 25, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

جے آئی ٹی کی رپورٹ سے دو دن پہلے حکمران جماعت کے تحقیقاتی ٹیم پر اعتراضات سامنے آ گئے

جے آئی ٹی کی رپورٹ سے دو دن پہلے حکمران جماعت کے تحقیقاتی ٹیم پر اعتراضات سامنے آ گئے
July 8, 2017

اسلام آباد(92نیوز)جے آئی ٹی کی رپورٹ سے دو دن پہلے حکمران جماعت کے تحقیقاتی ٹیم پر اعتراضات سامنے آ گئے ۔ شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں ہیں کہ وزیراعظم استثنیٰ لے سکتے تھے مگر نہیں لیا جبکہ احسن اقبال کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف نے ملک کو سیاسی تھیٹر بنا دیا ۔

تفصیلات کےمطابق حکمران جماعت کا وزیراعظم نوازشریف کی زیرصدارت اہم مشاورتی اجلاس ہوا۔ جس میں اپوزیشن  خاص طور پر عمران خان کو آڑے ہاتھوں لینے کی حکمت عملی تیار کی گئی ۔مشاورتی اجلاس مکمل ہوا تو وفاقی وزرا آستینیں چڑھائے میڈیا کے سامنے آئے  اور جے آئی ٹی کیا عمران خان کیا سبھی کو لتاڑ دیا۔ سب سے پہلے بولے شاہد خاقان عباسی اور کہا کہ وزیراعظم استثنٰی لے سکتے تھے مگر نہیں لیا ۔احتساب سے گھبرانے والے نہیں ۔

احسن اقبال بھی خوب بولے اور نام لیئے بغیر عمران خان کو کھری کھری سنا گئے ۔بولے کہ تحریک انصاف نے ملک کو سیاسی تھیٹر بنا دیا ہے ۔ حکومت کے خلاف کرپشن ثابت کریں ،شکست خوردہ لیڈر جمہوریت کے خلاف سازش کر رہا ہے۔

شاہد خاقان عباسی کا مزید کہنا تھا  جے آئی ٹی کو جو چاہیے تھا وہ مہیا کیا گیا ۔ وزیراعظم کے خلاف کرپشن کا کوئی کیس نہیں جبکہ احسن اقبال نے کہا کہ مافیا اور گاڈ فادر کے دور میں عدالتیں نہیں لگتیں دھرنے دینے والوں نے ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا۔

خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ قطری شہزادے کا بیان ریکارڈ نہ کیا تو جے آئی ٹی رپورٹ قبول نہیں کریں گے حکومت نے بڑا اعلان کردیا،۔  جے آئی ٹی میں ریکارڈ آڈیو ویڈیو بیانات کو عوام کے سامنے لانے کا مطالبہ کردیا  ۔ وزیر ریلوے  سعد رفیق کہتے ہیں انصاف ہوتا نظر نہیں آ رہا جے آئی ٹی کو فون ٹیپ کرنے کا اختیار کس نے دیا؟ کہا گیا تھا کہ ٹیم کے سربراہ ایڈیشنل ڈی جی ایف آئی اے ہوں گے لیکن  ایسا نہیں ہے۔