Tuesday, January 18, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

جسے استعفیٰ دینا ہے دے مگر کوئی احتجاج نہیں کرے گا ، چیف جسٹس

جسے استعفیٰ دینا ہے دے مگر کوئی احتجاج نہیں کرے گا ، چیف جسٹس
March 3, 2018

لاہور(92 نیوز) چیف جسٹس آف پاکستان نے احد چیمہ کی گرفتاری پر افسران کو احتجاج سے روک دیا اور کہا کہ جسے استعفیٰ دینا ہے دے مگر کوئی احتجاج نہیں کرے گا ۔
سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں ایل ڈی سٹی از خود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی ۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ احد چیمہ کی گرفتاری پر کوئی افسر احتجاج نہیں کرے گا ،جسے استعفے دینا ہے،جسے بلایا جائے وہ تعاون کرے ۔
چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ اسمبلی میں احد چیمہ کے حق میں قرارداد کیسے آ گئی؟ ایسے تو قرارداد آ جائے گی کہ سپریم کورٹ نہیں بلا سکتی ۔
عدالت نے استفسار کیا کہ آج کل احد چیمہ کہاں ہے؟ جس پر ڈی جی ایل ڈی اے نے بتایا کہ نیب کی حراست میں ہے ۔
چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ گریڈ انیس کی کیا تنخواہ ہے اور احدچیمہ ڈی جی ایل ڈی اے کے عہدے پرکتنی وصول کرتے رہے ۔
پس پر چیف سیکرٹری نے بتایا ڈی جی ایل ڈی اے کی تنخواہ ایک لاکھ تک ہو سکتی ہے لیکن احد چیمہ سارے پروجیکٹ ملا کرچودہ لاکھ سے اوپر لے رہے تھے ۔
دوسری طرف چیف جسٹس نے پیراگون سٹی کی تفصیلات بھی طلب کر لیں ۔ جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ کس قانون کے تحت نجی کمپنیوں سے معاہدہ کیا گیا جس پر ڈی جی ایل ڈی اے نے بتایا ایل ڈی اے کےقوانین کے تحت چھ کمپنیوں سے معاہدہ کیا گیا ۔
چیف جسٹس نے کہا قانون پڑھ کر سنائیں،کسی جگہ نہیں لکھا کہ نجی کمپنی سے معاہدہ کیا جا سکتا ہے ۔
چیف جسٹس نےچھ کمپنیوں کے مالکان اور شئیر ہولڈرز کی تفصیلات طلب کر لیں ۔
جسٹس سابق نثار نے پوچھا معاہدے کے وقت ڈی جی ایل ڈی اے کون تھا؟ تو ڈی جی ایل ڈی اے نے بتایا اُس وقت ڈی جی ایل ڈی اے احدچیمہ تھے،آج کل قائداعظم پاورلانٹ کے سی ای او ہیں ۔
عدالت نے احد چیمہ کا سروس پروفائل اور تنخواہوں اور مراعات کا تمام رکارڈ طلب کر لیا ۔
چیف جسٹس نے نیب کوہدایت کی کہ کسی کوہراساں نہ کیا جائے،انہوں نے حکم دیا کہ نیب کو بھی کوئی ہراساں نہیں کرے گا ۔