Tuesday, January 18, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

جدید ٹیکنالوجی سے لیس دنیا کے پہلے سمارٹ شہر نے لوگوں کی زندگی بدل دی

جدید ٹیکنالوجی سے لیس دنیا کے پہلے سمارٹ شہر نے لوگوں کی زندگی بدل دی
April 9, 2016
میڈرڈ (ویب ڈیسک) ٹیکنالوجی عروج کی منازل طے کرنے میں مصروف ہے۔ سمارٹ فونز یا سمارٹ ٹیکنالوجی سے مزین اشیاءکا ذکر تو سننے میں ملتا ہی رہتا ہے مگر اب شہر بھی سمارٹ ہوا کریں گے مگر اس سے مراد دبلاپتلا ہونا نہیں ہے بلکہ شہروں کو جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ کر کے مختلف مسائل پر قابو پانا ہے۔ ماہرین ٹیکنالوجی کچھ عرصے سے سمارٹ شہروں کا تصور پیش کرتے آئے ہیں مگر اس کا باقاعدہ پہلا تجربہ سپین کے شہر سن تن دیر (ایک ساحلی شہر) کو حاصل ہوا ہے۔ سمارٹ سٹی سے مراد ایسا شہر لیا جا رہا ہے جہاں ہر قسم کی ڈیجیٹل معلومات دستیاب ہوں اور وہاں کسی بھی ہنگامی صورت حال میں سینسر خود بخود الارم بجانا شروع کر دیتے ہیں۔ ہسپانوی شہر کو سمارٹ سٹی کا درجہ ملنے کے بعد ڈیجیٹل سینسرز کئی مقامات پر نصب کر دیے گئے ہیں۔ اطلاعات ہیں کہ ہزاروں اطلاعاتی سینسروں سے شہر کی ہیت بدل کر رہ گئی ہے۔ کسی بھی شکایت کی صورت میں سینسر الارم بجا دیتے ہیں جس سے انتظامیہ حرکت میں آ جاتی ہے۔ شہری انتظامیہ نے سمارٹ فونز کے لیے ایک ایپ بھی تیار کیا ہے جس کی مدد سے ہر قسم کی معلومات دستیاب ہو سکتی ہیں۔ پارکنگ فیس بھی اسی ایپ سے ادا کرنے کی سہولت موجود ہے۔ سمارٹ سٹی کا تصور 2009ءمیں سپین کے ہی پروفیسر لوئیس مونوز نے پیش کیا تھا۔ انہوں نے شہر میں پارکنگ کے گھمبیر مسئلے کے تناظر میں یہ تصور شہری انتظامیہ کے سامنے رکھا تھا۔ سمارٹ سٹی کی بدولت شہر کے پونے دو لاکھ کے قریب باسی ایک زندہ لیبارٹری کا حصہ بن چکے ہیں۔ شہر بھر میں نصب سینسر کوڑے کے ڈرم بھرنے پر فوری اطلاع کرتے ہیں اور بارش کی اطلاع بھی یہی سینسر فراہم کرتے ہیں۔