Friday, October 7, 2022

جج نے کورٹ آف لا بن کرمیرے خلاف 62،63 کا فیصلہ کیا ، شاہد خاقان عباسی

جج نے کورٹ آف لا بن کرمیرے خلاف 62،63 کا فیصلہ کیا ، شاہد خاقان عباسی
اسلام آباد ( 92 نیوز ) سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے 92 نیوز کے پروگرام ’’ ہو کیا رہا ہے ‘‘ میں رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جج نے کورٹ آف لا بن کر میرے خلاف 62،63  کا فیصلہ کیا ، میں 8 بار رکن قومی اسمبلی منتخب ہوا ، ہر دفعہ یہی اثاثے ڈکلیئر کئے ۔ شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ الیکشن کا بائیکاٹ ملکی مفاد میں نہیں، تاہم الیکشن متنازعہ بنتا جا رہا ہے، جج کے پاس اس طرح کے فیصلے کا اختیار نہیں، قانونی راستہ اختیار کرینگے لیکن انصاف کی توقع نہیں۔ الیکشن ٹربیونل نے شاہد خاقان عباسی کو  حلقہ این اے 57 سے   الیکشن لڑنے کیلئے نا اہل قرار دیا تھا، الیکشن ٹربیونل نے  شاہد خاقان عباسی کو آرٹیکل 62 ایف ون کے تحت نا اہل قرار دیا۔ الیکشن ٹربیونل کے مطابق  شاہد خاقان عباسی نے اپنے اثاثوں کی قیمت کم ظاہر کی تھی ۔