Sunday, November 27, 2022

ثروت اعجاز قادری اورشاہد غوری کو آٹھ گھنٹے پوچھ گچھ کے بعد گھر جانے کی اجازت، حراست میں نہیں لیا گیا: سربراہ سنی تحریک

ثروت اعجاز قادری اورشاہد غوری کو آٹھ گھنٹے پوچھ گچھ کے بعد گھر جانے کی اجازت، حراست میں نہیں لیا گیا: سربراہ سنی تحریک
کراچی (نائنٹی ٹو نیوز) کراچی میں رینجرز نے سنی تحریک کے سربراہ ثروت اعجاز قادری اور شاہد غوری کو آٹھ گھنٹے تک پوچھ گچھ کے بعد گھر جانے کی اجازت دیدی ہے۔ ثروت اعجاز قادری کہتے ہیں انہیں حراست میں نہیں لیا گیا سنی تحریک شہر میں امن وامان کے قیام کیلئے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ ہے۔ سنی تحریک کے رہنما ثروت اعجاز قادری شاہد غوری اور ساتھیوں کے ساتھ شام چھے بجے رینجرز ہیڈکوارٹر گئے۔ رات ایک بجے رینجرز نے ثروت اعجاز قادری اور شاہد غوری کے ساتھیوں کو ہیڈکوارٹر سے واپس بھیج دیا جبکہ سنی تحریک کے دونوں رہنما رات اڑھائی بجے رینجرز ہیڈ کوارٹر سے گھر واپس مرکزی دفتر پہنچے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ثروت اعجاز قادری کا کہنا تھا انہیں حراست میں لئے جانے کی اطلاعات محض غلط فہمی تھی۔ ان کی رینجرز حکام سے ملاقات تھی۔ افطاری اور نمازتراویح کی وجہ سے اتنا وقت لگا۔ ان کا کہنا تھا کراچی کی بہتری اور ملکی سلامتی کے لئے سب کو قربانی دینا ہو گی۔ تبدیلی آنی ہے اور تبدیلی کے لئے کام کرنا ہے۔ زیرحراست کارکنوں کے خلاف تحقیقات جاری ہیں ان کیخلاف پرانی ایف آئی آر ہیں۔ یاد رہے کہ رینجرز نے سنی تحریک کے مرکزی دفتر پر چار روز میں دو بار چھاپہ مارا۔ چھاپوں میں اہم دستاویزات اور آٹھ مشتبہ افراد کو حراست میں لیا گیا تھا۔