Monday, September 26, 2022

تاج برطانیہ سے کوہ نور ہیرا واپس لینے کیلئے عدالت میں پٹیشن دائر

تاج برطانیہ سے کوہ نور ہیرا واپس لینے کیلئے عدالت میں پٹیشن دائر
لاہور (92نیوز) لاہور ہائیکورٹ میں برطانیہ سے نایاب اور تاریخی کوہ نور ہیرا واپس لانے کی درخواست دائر کی گئی ہے جس کے بعد کوہ نور ہیرے کی کہانی پھر زندہ ہو گئی۔ تفصیلات کے مطابق کوہ نور ہیرا مختلف بادشاہوں، راجاو¿ں اور حاکموں سے ہوتا ہوا آج کل انگلینڈ کی ملکہ الزبتھ کی ملکیت ہے۔ اب اس کا وزن 21گرام اور ماہیت 105قیراط ہے۔ برطانیہ لے جانے سے قبل اس کا وزن 37 گرام تھا۔ کوہ نور ہیرا برصغیر کے مختلف ہندو اور مسلمان حکمرانوں سے ہوتا ہوا 1526ءمیں مغل بادشاہ بابر کے ہاتھ اس وقت آیا جب اس نے ابراہیم لودھی کو شکست دے کر دہلی پر قبضہ کرلیا۔ بابر کے بعد یہ ہیرا ہمایوں کے پاس پہنچا۔ اس ہیرے کو ”کوہِ نور“ کا نام افغان سلطنت کے بادشاہ نادر شاہ نے دیا تھا۔ یہی وجہ ہے کہ افغانستان بھی اس ہیرے کا دعویدار ہے۔ 1739ءمیں جب نادر شاہ نے آگرہ اور دہلی پر حملہ کیا تو واپسی پر تخت طاو¿س کے ساتھ اس ہیرے کو بھی ایران لے آیا۔ اس طرح ایران بھی اس ہیرے کا دعویدار بن بیٹھا۔ 1747ءمیں نادر شاہ کے قتل کے بعد کوہِ نور ہیرا افغانستان کے احمدشاہ ابدالی کے قبضے میں آگیا۔ 1830ءمیں معزول حاکم شاہ شجاع نے یہ ہیرا پنجاب کے مہاراجہ رنجیت سنگھ کے حوالے کر دیا مگر پنجاب پر انگریزوں کے قبضے کے بعد خفیہ طور پر یہ ہیرا لاہور کے شاہی قلعے سے برطانیہ بھجوا دیا گیا اسی لئے 1976ءمیں ذوالفقار علی بھٹو نے اس وقت کے برطانوی وزیراعظم جم کالاہان سے ہیرے کی واپسی کا مطالبہ کیا۔ آج کل کوہِ نور ہیرا ٹاور آف لندن میں موجود ہے۔