Saturday, February 4, 2023

بھارت میں کسانوں کا احتجاج 15ویں روز میں داخل

بھارت میں کسانوں کا احتجاج 15ویں روز میں داخل

نئی دہلی (92 نیوز) مودی حکومت کی کسان دشمن پالیسیوں کیخلاف بھارت میں کسانوں کا15 ویں روز بھی احتجاج جاری ہے ، شدید سردی کے باوجود دہلی کے سنگھو اور تکری بارڈرز پر ہزاروں مظاہرین کا دھرنا جاری ہے ۔

بی جے پی حکومت کی کسان دشمن پالیسیوں کیخلاف بھارتی کسانوں کا 15 ویں روز بھی بھرپور احتجاج جاری ہے، شدید سردی کے باوجود ہزاروں کسان دہلی کے سنگھو اور تکری بارڈرز پر دھرنا دیئے بیٹھے ہیں۔ بھارتی کسانوں نے 14 دسمبر تک احتجاج کا دائرہ ملک بھر میں پھیلانے کا اعلان کر دیا۔

 بھارتی میڈیا کے مطابق کسانوں نے دہلی، جےپور ہائی وے کی بندش، ریلائنس مالز کا بائیکاٹ اور ٹول پلازوں کا کنٹرول حاصل کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔کسان رہنماؤں کا کہنا ہے کہ پابندیوں کے باوجود بہت سے کسان احتجاج میں شامل ہونے کیلئے دہلی آ رہے ہیں، مودی حکومت ہماری تحریک کو کمزور کرنا چاہتی ہے لیکن جب تک متنازعہ زرعی قوانین ختم نہیں کیے جاتے ہمارا احتجاج جاری رہے گا۔

بھارتی پنجاب کے وزیر برائے امور کابینہ نے مودی حکومت کی ہنڈیا بیچ چوراہے پھوڑ دی، بھارتی وزیر کا کہنا ہے کہ مودی حکومت کسانوں کے احتجاج کو سبوتاژ کرنا چاہتی ہے، کسانوں کےساتھ معاملات حل کرنے کی بجائے، مودی حکومت احتجاج کی حمایت کرنے پر پنجاب کے وزیر اعلی امریندر سنگھ کو دھمکانے کی کوشش کر رہی ہے۔