Wednesday, December 7, 2022

ایڈیلیڈ ٹیسٹ میں پاکستان کو ایک اننگز اور 48 رنز سے شکست

ایڈیلیڈ ٹیسٹ میں پاکستان کو ایک اننگز اور 48 رنز سے شکست
ایڈیلیڈ ( 92 نیوز) ایڈیلیڈ ٹیسٹ میں پاکستان کو ایک اننگز اور 48 رنز سے شکست ہو گئی ۔ 335 رنز بنا کر بھی ناقابل شکست رہنے والے ڈیوڈ وارنر مرد میدان قرار پائے ۔ فالو آن کی شکار ٹیم کے بلے باز دوسری اننگز میں بھی دغا دے گئے  ۔امام الحق صفر ، کپتان اظہر علی  9  ،مڈل  آرڈر بابر اعظم 8 رنز بنا کر  چلتے بنے ۔ اوپنر شان مسعود 68 اور مڈل آرڈر اسد شفیق کی ہمت بھی 57 رنز پر جواب دے گئی ، افتخار احمد بھی 27 اسکور بنا کر پویلین لوٹ گئے ۔ گزشتہ میچ میں سینچری اسکور کرنے والے یاسر شاہ  دوسری اننگز میں 13 رنز ہی بنا پائے  ، شاہین شاہ آفریدی بھی ایک رن بنا کر ایل بی ڈبلیو ہو گئے ۔ کھانے کے وقفے تک  پاکستانی ٹیم نے 8 وکٹوں کے نقصان پر 229 رنز بنائے تھے  جبکہ انہیں  آسٹریلیا کی پہلی اننگزکا اسکور چکتا کرنے کیلئے  ابھی بھی 58 رنز درکار تھے ۔ وقفے کے بعد  وکٹ کیپر بلے باز رضوان بھی چلتے بنے ،محمد عباس پاکستان کی جانب سے آؤٹ ہونے والے دسویں اور آخری بلےباز تھے ، وہ رن آؤٹ ہوئے ۔ آسٹریلیا کی جانب سے نیتھن لیون نے 5 کھلاڑیوں  کو پویلین کی راہ دکھائی  ، ہیزل ووڈ نے  تین اور مچل سٹارک نے ایک کھلاڑی کو میدان بدر کیا۔ اس سے قبل پاکستان کی ٹیم پہلی اننگز میں آسٹریلیا کے 589 رنز کے جواب میں 302 رنز بنا کر آل آؤٹ ہو گئی تھی ۔ پہلی اننگز میں بھی پاکستانی ٹیم  کا آغاز مایوس کن رہا ، 589 کے پہاڑ جیسےہدف کے تعاقب میں امام الحق کی صورت میں پہلا دھچکا صرف تین کے مجموعی اسکور پر لگا ،  امام الحق صرف دو رنز بنا  کرسٹارک کی گیند پر وارنر کو کیچ تھما بیٹھے ۔ 22 کے مجموعی اسکور پر ٹاپ آرڈر اور کپتان اظہر علی بھی 9 رنز بنا کر ہمت ہار گئے ، ان کا شکار کمیونز نے کیا  جبکہ کیچ سمتھ نے پکڑا۔ قومی ٹیم کو تیسرا نقصان اوپنر شان مسعود کی شکل میں 38 کے مجموعی اسکور پر اٹھانا پڑا جب  وہ ہیزل ووڈ کی گیند پر وکٹ کیپر کو کیچ تھما کر چلتے بنے ، انہوں نے 19 رنز بنائے ۔ امیدوں کے محور اسد شفیق کی کار کردگی بھی مایوس کن رہی ، وہ صرف 9 رنز بنا پائے ، ان کا شکار بھی اسٹارک نے کیا جب کہ کیچ وکٹ کیپر نے تھاما۔ چوتھی نمبر پر کھیلنے والے مڈل آرڈر بابر اعظم  نے 97 رنز بنائے ، وہ محتاط بیٹنگ کرتے کھڑے رہے جبکہ ان کے ساتھی وکٹیں گنواتے رہے ۔ بابر اعظم  بھی سٹارک کی گیند پر وکٹ کیپر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے ۔ افتخار احمد 10 جبکہ وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان  بغیر کوئی اسکور بنائے پویلین لوٹے ۔ باؤلنگ کے شعبے میں ناکام رہنے والے یاسر شاہ نے محتاط انداز میں بیٹنگ کر کے سب کو حیران کر دیا ، انہوں نے اپنے ٹیسٹ کیرئیر کی پہلی سینچری داغی ، وہ 213 گیندیں کھیل کر 113 رنز بنا پائے  اور پاکستان کی جانب سے ٹاپ  اسکورر بھی رہے ۔ وہ کمیونز کی گیند پر لیون کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے ،شاہین شاہ آفریدی بغیر کھاتا کھولے ہی  پویلین لوٹ گئے  جبکہ محمد عباس 29 رنز  بنا کر آؤٹ ہوئے ۔ اس سے پہلے آسٹریلیا نے پہلی اننگز  میں پاکستان  کیلئے پہاڑ جیسا اسکور کھڑا کر دیا۔ آسٹریلیا کی جانب سے بھی کھیل کا مایوس کن آغاز کیا گیا ، جب جوئے برنز آٹھ کے مجموعی اسکور پر  چار رنز بنا کر شاہین شاہ آفریدی کا شکار بن گئے ، ان کا کیچ وکٹ کیپر محمد رضوان نے پکڑا۔ پہلی وکٹ گرنے کے بعد اوپنر ڈیوڈ وارنر اور ٹاپ آرڈر لیبوشگنے نے 361 رنز کی پارٹنر شپ قائم کی ، ڈیوڈ وارنر ایک چھکے اور 39 چوکوں کی مدد سے 335 رنز بنا کر ناقابل شکست رہے جبکہ لیبو شگنے نے  22 چوکوں کی مدد سے 162 رنز بنائے ۔وہ شاہین شاہ آفریدی کی گیند پر کلین بولڈ ہوئے ۔ سٹیون سمتھ نے 36 رنز بنائے  ، وہ بھی شاہین شاہ آفریدی کا شکار  بنے ، ان کا کیچ  وکٹ کیپر محمد رضوان نے پکڑا۔ مڈل آرڈر میتھیو ویڈ 38 اور اوپنر سٹیون سمتھ 335 رنز کیساتھ ناقابل شکست رہے ، آسٹریلیا کی ٹیم نے تین وکٹوں کے نقصان پر  589 رنز بنا کر اننگز ڈکلیئرڈ کر دی تھی ۔