Wednesday, February 8, 2023

اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کی طرف سے پارٹی قیادت کو استعفے جمع کرانے کا سلسلہ جاری

اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کی طرف سے پارٹی قیادت کو استعفے جمع کرانے کا سلسلہ جاری

لاہور (92 نیوز) اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کی طرف سے پارٹی قیادت کو استعفے جمع کرانے کا سلسلہ جاری ہے۔ ظہیر چنڑ، ثانیہ عاشق، عظمیٰ بخاری، راحیلہ خادم، سمیع اللہ کے استعفے جمع ہو گئے۔

پی ڈی ایم قیادت کی جانب سے استعفوں کے اعلان کے بعدارکان اسمبلی کے استعفوں کی جھڑی لگ گئی۔ گوجرانوالہ سے مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی سابق وفاقی وزیر چودھری بشیر محمود ورک نے استعفیٰ دے دیا۔ این اے چوراسی سے رکن قومی اسمبلی اظہر قیوم ناہرا نے بھی استعفیٰ پارٹی قیادت کو بھجوا دیا ہے۔

مسلم لیگ ن کے ایم پی اے سمیع اللہ خان بھی استعفیٰ دینے والوں کی دوڑ میں شامل ہو گئے۔ رکن پنجاب اسمبلی عظمیٰ زاہد بخاری نے بھی اپنا استعفیٰ پارٹی قیادت کو بھجوا دیا ہے۔ ن لیگی ایم پی اے چودھری بلال اکبر نے بھی استعفیٰ جمع کرا دیا۔ اختر حسین نے بھی پنجاب اسمبلی کی رکنیت سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کر لیا۔ چودھری عادل بخش چٹھہ نے بھی پارٹی قیادت کو استعفیٰ پیش کر دیا ہے۔ ن لیگی ایم پی اے بلال تارڑ نے بھی اپنا استعفیٰ پارٹی قیادت کو ارسال کیا ہے۔

مسلم لیگ ن کی عنیزہ فاطمہ نے بھی پارٹی قیادت کو استعفیٰ بھجوایا ہے۔ راحیلہ خادم حسین نے نواز شریف اور شہباز شریف کے نام استعفیٰ جمع کرا دیا۔ ایم پی اے صہیب بھرتھ نے بھی اپنی نشست سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ ن لیگی ایم پی اے جہانگیر خانزادہ نے بھی قیادت کو استعفیٰ دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ سید یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے علی حیدر گیلانی ایم پی اے نے استعفیٰ پارٹی چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹوزرداری کو پیش کر دیا۔

کئی ارکان نے ٹائپ شدہ استعفے اسپیکرز اور قیادت  کے نام  بھیجے۔ اسمبلی ذرائع کے مطابق مستعفی ہونے کے لیے ہاتھ سے لکھا استعفی ضروری ہے۔