Saturday, October 1, 2022

اوباما کی ہیروشیما میں باتوں سے امن کے پھول کھلانے کی کوشش، جنگوں میں قتل وغارت کے خلاف لمباچوڑا بھاشن بھی دے ڈالا

اوباما کی ہیروشیما میں باتوں سے امن کے پھول کھلانے کی کوشش، جنگوں میں قتل وغارت کے خلاف لمباچوڑا بھاشن بھی دے ڈالا
ہیروشیما(ویب ڈیسک)ایٹم بم  سے تباہ   ہیروشیما میں باتوں سےامن کےپھول کھلانےکی کوشش کی  اور تو اور جنگوں میں قتل وغارت کےخلاف لمباچوڑابھاشن بھی دے ڈالا۔ مگرجاپانی شہروں میں  آسمان سےجوموت برسائی،اس پرمعذرت  تودورندامت کاایک لفظ بھی منہ سے نہ نکالا، کہتےہیں دنیاکوپرامن بنانےکےلیےباہمی اختلافات کوبھلاناہوگا۔ تفصیلات کےمطابق بدلتاہےرنگ آسمان کیسےکیسے،امریکی صدرنےہیروشیماکاتاریخی دورہ کرکےتاریخ رقم کردی  ہے وہ  باتوں سےامن کےپھول کھلاتےرہے۔ان کاکہناتھاکہ دنیا کو ذمے داری لینا ہوگی کہ ہیروشیما جیسا واقعہ دوبارہ پیش نہ آئے جنگیں ہمیشہ تباہی لاتی ہیں۔ لیکن دنیاجانتی ہےکہ  آج سےاکہترسال پہلےصدراوباماکےملک امریکانےآسمان سے موت کےگولےپھینک کرلاکھوں جاپانیوں کوموت کی ایسی نیندسلایاکہ  دنیااس کےبارےمیں آج بھی سوچ کرکانپ اٹھتی ہے۔ باراک اوباما نے  دوسری جنگ عظیم  کی وجوہات  سے لےکرد نیا میں امن کےبارےلمباچوڑابھاشن دیا۔ لیکن  اپنےملک کےجوہری حملےمیں  لاکھوں  بےگناہ جاپانیوں کی موت پرمعافی مانگی نہ ذراسی بھی ندامت کااظہارکیا۔ گذشتہ سترسال کے دوران کسی بھی امریکی صدر کا ہیرو شیما کا یہ پہلا دورہ ہے  اورباراک اوباما کے  مطابق  یہ دورہ انسانی ہمدردی کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔ obama obamasa