Monday, November 29, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

پاکستان سمیت دنیا بھر میں انسانی سمگلنگ کا کاروبار سالانہ 7 ارب ڈالر سے زائد تک پہنچ گیا

پاکستان سمیت دنیا بھر میں انسانی سمگلنگ کا کاروبار سالانہ 7 ارب ڈالر سے زائد تک پہنچ گیا
July 30, 2016
اسلام آباد (92نیوز) انسانی سمگلنگ مکروہ دھندہ بن چکا۔ بہتر مستقبل کی تلاش میں نجانے کتنے لوگ موت کی وادی میں اتر گئے ہیں۔ پاکستان سمیت دنیا بھر میں انسانی سمگلروں کو روکنے کیلئے کوئی ٹھوس اقدامات نظر نہیں آتے۔ تفصیلات کے مطابق 30جولائی کو پاکستان سمیت دنیا بھر میں انسانی سمگلنگ کےخلاف عالمی دن منایا جاتا ہے۔ اس کا مقصد لوگوں میں شعور پیدا کرنا اور مسئلے کے حل کےلئے پلان ترتیب دینا ہے۔ اقوام متحدہ کے اعدادوشمار کے مطابق دنیا بھر میں انسانی سمگلنگ کا کاروبار سالانہ 7 ارب ڈالر سے زائد ہے۔ ایک اندازے کے مطابق صرف امریکہ میں سالانہ 5لاکھ لوگ غیر قانونی طریقے سے داخل ہوتے ہیں۔ یورپی یونین ممالک میں بھی اتنے ہی لوگوں کی غیرقانونی آمد ہوتی ہے۔ بے شمار لوگ سمگل کرنے والے اداروں کے ہاتھوں فروخت بھی کئے جاتے ہیں۔ پاکستان سے یومیہ اور ماہانہ ہزاروں افراد کو غیرقانونی طور پر بیرون ملک بھجوایاجاتا ہے۔ انسانی سمگلر لوگوں کی جان کی پروا کئے بغیر انہیں پرخطر زمینی اور سمندری راستوں سے بارڈرکراس کرواتے ہیں۔ اس دوران بہت سے لوگ بارڈر سکیورٹی فورسز کی فائرنگ کا نشانہ بنتے ہیں اور بہت سے سمندر میں ڈوب کر مر جاتے ہیں۔ عالمی سطح پر انسانی سمگلنگ کو باقاعدہ جرم قرار دیا گیا ہے۔ ایف آئی اے میں بھی انسداد انسانی سمگلنگ سیل عرصہ دراز سے قائم ہے جس کا مقصد انسانی سمگلنگ کی روک تھام اور انسانی سمگلروں کےخلاف موثر کارروائی کرنا ہے لیکن بدقسمتی سے یہ سیل مطلوبہ نتائج فراہم کرنے میں ناکام ہے اور اس کی کارکردگی محض لفظوں تک ہی محدود ہے۔