Tuesday, October 4, 2022

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا وزیراعظم بننے کی خواہش کا اظہار

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا وزیراعظم بننے کی خواہش کا اظہار
لاہور (92 نیوز) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے وزیراعظم بننے کی خواہش کا اظہار کردیا۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق سے صحافی نے سوال کیا کہ آپ کے پی میں وزیرخزانہ تھے جس کی وجہ سے تحریک انصاف صوبے میں دوبارہ کامیاب ہوگئی، کیا آپ کو وفاق میں وزیرخزانہ بنایا جائے تو معاشی حالات ٹھیک کرلیں گے، اس پر سراج الحق نے جواب دیا انہیں وزیر خزانہ نہیں وزیراعظم کیوں نہ بنایا جائے جس نے اصل فیصلے کرنا ہوتے ہیں۔ سراج الحق نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایک بار چینی برآمد پھر درآمد کرکے ملک کو نقصان پہنچایا گیا۔ میں کے پی کے صوبے کا دوباروزیر خزانہ رہا ہوں۔ میرے دور میں صوبہ قرض فری ہوگیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ روزانہ بیس ارب قرضہ لیا جاتا رہا تو حکومت کے خاتمے تک 50 ہزار ارب قرضہ پہنچ چکا ہوگا۔ حکومت نے آئی ایم ایف کے حکم پر گورنر اسٹیٹ بینک اور مشیر خزانہ مسلط کئے گئے ہیں۔ امیر جماعت اسلامی کہتے ہیں کہ ایم ایف کی شکل میں ایسٹ انڈیا کمپنی مسلط ہوگئی۔ آئی ایم ایف اب صرف معاشی ہی نہیں سیاسی و تہذیبی ایجنڈا بھی لیکر آرہا ہے۔ گیس و پسراج الحق ٹرولیم مصنوعات میں 204ارب روپے عوام کی جیب سے نکال لیا گیا ہے۔ ڈیزل میں 46 پٹرول پر 35 روپے اضافی لے رہی ہے۔ جتنے خرچے میں باہر سے پٹرولیم مصنوعات آرہی ہیں اتنے میں عوام کو دیں۔ ان کا کہنا تھا کہ کیا بائیس کروڑ عوام کے لئے یوٹیلیٹی سٹورز دیہاتوں میں ہیں؟۔ ساڑھے چار ہزار یوٹیلیٹی سٹور بائیس کروڑ عوام کے لئے کافی ہیں؟۔ بتایا جائے شوگر سیکنڈل سے کس نے فائدہ اٹھایا؟۔ ان میں بعض نے بیرون ملک شوگر ملز لگانا شروع کردیئے ہیں۔ یہ وہ سرمایہ دار ہیں جنہوں نے جہاز دیئے پیسے دیئے اب کما رہے ہیں۔ سراج الحق بولے کہ حکومت نے اعلان کیا تھا تحقیقاتی رپورٹ سامنے لائے گی، مگر وزیر اعظم نے اپنے قریبی ساتھیوں کو بے گناہ قرار دے دیا۔