Wednesday, December 7, 2022

امریکی تنظیم کا سفری پابندیوں کا نیا ایگزیکٹو آرڈر چیلنج کرنے کا اعلان

امریکی تنظیم کا سفری پابندیوں کا نیا ایگزیکٹو آرڈر چیلنج کرنے کا اعلان

نیویارک (ویب ڈیسک) ڈیموکریٹس نے چھ مسلم ممالک کے شہریوں پر سفری پابندی کے ٹرمپ کے نئے ایگزیکٹو آرڈر کو بھی مسلمانوں پر پابندی قرار دے دیا۔ ادھر امریکن سول لبرٹیز یونین کا کہنا ہے کہ ٹرمپ کے سفری حکم نامے کو چیلنج کرتے رہیں گے۔ ڈیمو کریٹس رہنماؤں نے ٹرمپ کے سفری پابندی کے نئے حکم نامے کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

امریکی کانگریس کے رکن کیتھ ایلی سن کا کہنا ہے کہ ٹرمپ کا نیا ایگزیکٹو آرڈر بدستور مسلمانوں پر پابندی ہے۔ سینیٹر چک شومر نے سفری پابندی کے حکم نامے کو امریکی روایات کے خلاف قرار دیتے ہوئے کہا اس آرڈر کو منسوخ ہونا چاہیے، یہ صدارتی حکم نامہ امریکا کو غیرمحفوظ بنا دے گا۔

نینسی پیلوسی نے نئے ایگزیکٹو آرڈر پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سفری پابندی کا نیا حکم نامہ مسلمانوں اور تارکین وطن پر عائد غیرآئینی پابندی کی حیثیت تبدیل نہیں کر سکتا۔ امریکا کی کئی یہودی تنظیموں نے بھی نئے ایگزیکٹو آرڈر کی مذمت کی ہے۔

ادھر امریکن سول لبرٹیز یونین نے کہا ہے کہ سفری پابندی کا نیا صدارتی حکم نامہ مسلمانوں کے ساتھ مذہبی امتیازی سلوک پر مبنی ہے۔ ٹرمپ کے سفری پابندی سے متعلق حکم نامے کو چیلنج کرتے رہیں گے۔