Friday, September 30, 2022

افغان امن عمل کیلئے فریقین میں پہلے مذاکرات کے جلد انعقاد کا امکان

افغان امن عمل کیلئے فریقین میں پہلے مذاکرات کے جلد انعقاد کا امکان

کابل ( 92 نیوز) دیرپا قیام امن کیلئے  افغان فریقین کے درمیان پہلے مذاکرات کے جلد انعقاد کا امکان روشن ہو گیا۔

افغانستان میں 40 سالہ جنگ کے خاتمے کیلئے کوششیں تیزکردی گئیں، ذرائع  کے مطابق افغان دھڑوں کے درمیان مذاکرات کیلئے مقامات کا تعین جاری ہے۔

ذرائع کے مطابق  قطر، ناروے اور چند دیگر ممالک افغان فریقین کے مابین مذاکرات کی میزبانی کر سکتے ہیں۔ امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد افغانستان میں موجود ہیں جب کہ ان کی   پاکستان آمد کا بھی امکان ہے ۔

ذرائع کے مطابق   زلمے خلیل زاد  بلغاریہ، ناروے اور قطر کا بھی دورہ کریں گے،  امریکا طالبان امن معاہدے کے تحت افغان حکومت نے 5 ہزار طالبان قیدی، طالبان نے ایک ہزار سرکاری اہلکار رہا کرنا ہیں ۔ امن معاہدے کی روح سے قیدیوں کے رہائی کے فوراً بعد افغان فریقین کے مابین مذاکرات ہونا طے پایا تھا۔

افغان حکومت نے ابتک قریباً 3 ہزار طالبان قیدی رہا کیے جبکہ مزید 2 ہزار کی رہائی کا عندیہ دیا ہے،  امن معاہدے کے مطابق طالبان 860 سے زائد سرکاری یرغمالی رہا کر چکے، مزید کی رہائی کی شنید ہے۔