Friday, January 28, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

اصغر خان کیس ،شواہد کیلئے ایف آئی اے نے سپریم کورٹ سے مدد مانگ لی

اصغر خان کیس ،شواہد کیلئے ایف آئی اے نے سپریم کورٹ سے مدد مانگ لی
February 9, 2019
اسلام آباد ( 92 نیوز) اصغر خان کیس میں  شواہد کے لئے ایف آئی اے نے سپریم کورٹ سے مدد طلب کرلی۔ ایف آئی نے اپنی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرا دی جس میں کہا گیا کہ سیاستدانوں مین رقوم کی تقسیم کی تحققیات میں کوئی کسر نہیں چھوڑی مگر بد قسمتی سے کیس کی تحقیقات میں پیشرفت نہیں ہو سکی ، عدالت رہنمائی کرے ۔ دوسری جانب حکومت نے اصغر خان کیس کھلنے پر  خیر مقدم کیا ہے ۔ گیارہ  جنوری 2019 کو ایف آئی اے کی جانب سے سپریم کورٹ میں اصغر خان کیس بند کرنے کی استدعا کی گئی تھی جسے عدالت عظمیٰ نے مسترد کر دیا تھا۔ دوران سماعت اس وقت کے  چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے ریمارکس میں کہا تھا کہ  اصغر خان کی جدو جہد رائیگاں نہیں جانے دیں گے ، کیس کی تحقیقات ہر صورت ہونی ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ عدالتی فیصلے کے ایک ایک صفحے سے ثابت ہوا کہ یہ اسکینڈل ہوا ہے ،  اصغرخان کی زندگی کا بڑا حصہ اس کیس میں گزرا۔  اصل تحقیقات کا وقت آیا تو رکاوٹیں آنے لگیں ،  وکلا معاونت کریں تحقیقات کیسے کروائیں۔ عدالت کا مقصد صرف دو افسران کے خلاف تحقیقات نہیں۔ ڈی جی ایف آئی اے نے موقف اپنایا کہ دس میں سے 6 سیاستدان انتقال کر چکے ہیں۔ باقی سیاسی رہنماؤں نے رقم وصول سے انکار کیا۔ چالان کے لیے ضروری ہے شواہد ہوں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کئی نکات ایسے ہیں جن پر تحقیقات کی جائیں تو ٹرائل کیلئے مواد مل سکتا ہے۔ اصغر خان کی اہلیہ ان کی جدوجہد کو جاری رکھے ہوئے ہیں۔ وکیل سلمان اکرم راجہ نے عدالت سے باضابطہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دینے کی استدعا کی تھی ۔ قبل ازیں وزیر اعظم عمران خان اصغر خان کیس میں ایف آئی اے کی رپورٹ پر برہم ہو گئے اور کیس کو منطقی انجام تک نہ پہنچانے پر تحقیقاتی ایجنسی سے جواب طلب کر لیا۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے ایف آئی اے سے طویل عرصے تک اصغر خان کیس انجام تک نہ پہنچانے پر جواب طلب کر لیا۔ گزشتہ برس 9 جون کو نواز شریف اور سراج الحق نے سپریم کورٹ میں اپنا جواب جمع کرایا جس میں انہوں نے 1990 کے انتخابات میں سابق لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانی سے پیسے لینے کی تردید کی ۔ سابق وزیرعظم نوازشریف نے اپنے جواب میں کہا کہ سابق ڈی جی آئی ایس آئی یا کسی نمائندے سے رقم حاصل نہیں ، 14اکتوبر 2015کو اپنا بیان ریکارڈ کروا چکاہوں۔ سراج الحق نے اپنے جواب میں کہا جماعت اسلامی نے آئی ایس آئی سے کبھی رقم نہیں لی ۔ نواز شریف پر پیسے لینے کا الزام سابق ایئر چیف مارشل اصغر خان نے لگایا تھا جس کے بعد معاملہ ملک کی سب سے بڑی عدالت میں ہے ۔