Wednesday, January 19, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس اختتامی مرحلے میں داخل

اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس اختتامی مرحلے میں داخل
January 29, 2018

اسلام آباد (92 نیوز) احتساب عدالت میں اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس اختتامی مرحلے میں داخل ہو گیا ۔
احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے اسحاق ڈار کےخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے ریفرنس کی سماعت کی ۔
دوران سماعت استغاثہ کے گواہان ڈائریکٹر نیب شکیل انجم ، ڈپٹی ڈائریکٹر نیب لاہور اقبال احسن ، عمر دراز ، کمشنر ان لینڈ ریونیو لاہور کے افسر اشتیاق احمد ، ڈسٹرکٹ آفیسر انڈسٹریز اصغر حسین اور نیب کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر زاور منظور نے اپنے اپنے بیانات قلمبند کرائے ۔
اشتیاق احمد نے اسحاق ڈار کا 1979 سے 1993 اور 2009 سے 2016 تک کا ٹیکس ریکارڈ جمع کراتے ہوئے بتایا کہ 1993 سے 2009 کے درمیان اسحاق ڈار کی دولت میں 91 گنا اضافہ ہوا ۔ جون 1993 میں اسحاق ڈار کی کل دولت 91 لاکھ 12 ہزار سے زائد تھی ۔ جون 2009 میں اسحاق ڈار کی طرف سے 83 کروڑ 16 لاکھ 78 ہزار سے زائد دولت ظاہر کی گئی ۔
انکم ٹیکس ریٹرن کے مطابق جون 1993 میں اسحاق ڈار کی آمدن 7 لاکھ 29 ہزار سے زائد تھی ۔ 2009 میں اسحاق ڈار کی آمدن بڑھ کر 4 کروڑ 64 لاکھ 62 ہزار سے زائد ہو گئی ۔
استغاثہ کے ایک اور گواہ انعام الرحمان بیماری کے باعث اپنا بیان قلمبند نہ کرا سکے ۔
اسحاق ڈار کےخلاف استغاثہ کے 28 گواہان میں سے اب تک 24 گواہوں نے اپنے بیانات قلمبند کرا دیئے ہیں ۔
نیب نے عدالت سے استدعا کی کہ وہ مزید 2 گواہوں ایسی ای سی پی کی سدرہ منصور اور سلمان سعید کو پیش کرنا چاہتے ہیں ۔
عدالت نے گواہوں کو پیش کرنے کی اجازت دیتے ہوئے سماعت کل ساڑھے 12 بجے تک ملتوی کر دی ۔