Friday, February 3, 2023

اردو ادب کے ماتھے کے جھومر اشفاق احمد کی چودھویں برسی آج منائی جارہی ہے

اردو ادب کے ماتھے کے جھومر اشفاق احمد کی چودھویں برسی آج منائی جارہی ہے
لاہور (92 نیوز) اردو ادب کے ماتھے کے جھومر اشفاق احمد کی چودھویں برسی منائی جارہی ہے۔ اُن کی ادبی تخلیقات شاہکار کا درجہ رکھتی ہیں۔ اردو کے افسانہ ، ڈرامہ اور نثر نگار اشفاق احمد فیروز پور میں پیدا ہوئے۔ گورنمنٹ کالج لاہور سے ایم اے کیا۔ اٹلی کی روم یونیورسٹی اور گرے نوبلے یونیورسٹی فرانس سے اطالوی اور فرانسیسی زبان میں ڈپلومے کئے۔ نیو یارک یونیورسٹی سے براڈ کاسٹنگ کی خصوصی تربیت حاصل کی۔ اشفاق احمد قیام پاکستان کے فوراً بعد ادبی افق پر نمایاں ہوئے اور انیس سو ترپن میں ان کا افسانہ گڈریا ان کو شہرت کی بلندیوں پر لے گیا۔ انیس سو پینسٹھ سے انہوں نے ریڈیو پاکستان لاہور پر ہفتہ وار فیچر پروگرام تلقین شاہ کے نام سے شروع کیا جو تیس سال سے زائد تک آن ائیر ہوا۔ ستر کی دہائی کے شروع میں اشفاق احمد نے معاشرتی اور رومانی موضوعات پر ایک محبت سو افسانے کے نام سے ایک ڈرامہ سیریز لکھی ۔ اسی کی دہائی میں ان کی سیریز توتا کہانی اور من چلے کا سودا نشر ہوئی جو عوام میں بہت مقبول ہوئی ۔ اشفاق احمد مایہ ناز صحافی اور دانشوربھی تھے۔ انہیں فقر اور فقیری سے عشق تھا، اردو ادب کے قاری ہمیشہ اشفاق احمد کی تحریروں سے استفادہ کرتے رہیں گے۔