Thursday, January 20, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

اثاثہ جات ریفرنس کیس ، استغاثہ کے گواہ واجد ضیا کا بیان قلمبند

اثاثہ جات ریفرنس کیس ، استغاثہ کے گواہ واجد ضیا کا بیان قلمبند
February 12, 2018

اسلام آباد (92 نیوز) احتساب عدالت میں اسحاق ڈار کیخلاف اثاثہ جات ریفرنس کیس میں استغاثہ کے گواہ واجد ضیا کا بیان قلمبند ہو گیا اور جے آئی ٹی کی اصل رپورٹ والیم ایک اور 9 بھی عدالت میں پیش کر دی گئی تاہم پراسیکیوٹر نیب کی تفتیشی کا بیان ریکارڈ کرنے کی استدعا مسترد کر دی گئی ۔
احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے اسحاق ڈار کےخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے ریفرنس کی سماعت کی ۔
جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء بطور گواہ پیش ہوئے ۔
واجد ضیاء نے جے آئی ٹی کی اصل رپورٹ کا والیم 1 اور 9 عدالت میں خود پیش کرتے ہوئے بیان ریکارڈ کرایا کہ 1992ء کی ویلتھ سٹیٹ منٹ کے مطابق اسحاق ڈار کے کل اثاثے 9.1 ملین روپے تھے ۔ 2008-9ء میں اثاثوں کی مالیت 831.6 ملین روپے تک پہنچ گئی ۔ اس عرصے میں اسحاق ڈار کے اثاثوں میں 91 گنا اضافہ ہوا ۔
واجد ضیاء نے بتایا کہ اسحاق ڈار نے 2008 ء میں 4.9 ملین برطانوی پاﺅنڈ بیٹے کو قرض دئیے لیکن بیٹے کا نام ظاہر کیا نہ ہی اس رقم کا ذریعہ بتایا ۔ جے آئی ٹی نے ایس ای سی پی ، مختلف بنکوں۔ ، ایف بی آر اور الیکشن کمیشن سے ریکارڈ حاصل کیا ۔ اسحاق ڈار سمیت مختلف شخصیات کے بیانات ریکارڈ کئے اور 10 جولائی 2017 کو حتمی رپورٹ پیش کی ۔
اس پر فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ آپ نے اپنے کیس میں اسحاق ڈار کیس تک محدود رہنا ہے ۔
بیان ریکارڈ کرانے کے بعد واجد ضیاء جے آئی ٹی کا والیم ایک اور 9 اپنے ہمراہ لے کر روانہ ہو گئے ۔
استغاثہ کے دوسرے گواہ نادر عباس کے بیماری کے باعث پیش نہ ہونے پر عدالت نے سماعت 14 فروری تک ملتوی کر دی ۔
سابق وزیر خزانہ کے خلاف ریفرنس میں اٹھائیس میں سے چھبیس گواہان کے بیانات قلمبند ہو چکے ہیں ۔
گزشتہ سماعت پر اصل جے آئی ٹی رپورٹ نہ ہونے کی وجہ سے واجد ضیاء کا بیان قلمبند نہیں ہوا تھا ۔
جج احتساب عدالت نے جے آئی ٹی رپورٹ کے والیم ایک سے نو کی حوالگی کے لیے رجسٹرار سپریم کورٹ کو دوبارہ خط لکھا تھا ۔
نیب ذرائع کے مطابق آج ریکارڈ احتساب عدالت کو موصول ہو جائے گا ۔ تمام گواہان کے بیانات ریکارڈ ہونے کے بعد نیب اپنی شہادت کلوز کر دے گی ۔