Tuesday, April 13, 2021
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد، شفاء فاﺅنڈیشن کمیونٹیز کو متحرک کرنے میں کامیاب

کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد، شفاء فاﺅنڈیشن کمیونٹیز کو متحرک کرنے میں کامیاب
February 26, 2021

فلڈ ، رین ایمرجنسی پر ہونے والے کاموں سے عوام نے بھر پور استفادہ حاصل کیا ہے ، پبلک ہیلتھ یو نٹس میں واش (WASH) سے متعلقہ سہولیات کی فراہمی نمایاں تبدیلیاں لانے کا موجب بنی!

کراچی (بیورو رپورٹ) خطرناک وبائی مرض کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے خطرات اور بالخصوص سندھ میں بارشوں اور سیلاب کے بعد کی صورتحال کے پیشِ نظر ٹھوس اقدامات عمل میں لائے جانے کی اشد ضرورت محسوس کی جارہی تھی ۔ یونیسیف اور شفاءفاﺅنڈیشن نے زخموں پر مرہم رکھا تو اُداس چہروں پر مسکراہٹوں کے رنگ بیکھر گئے ، بہت سی قیمتی زندگیاں جو شاید ضائع ہوسکتی تھیں ، محفوط ہو گئیں ۔ Awareness Sessions دئیے گئے تو کمیونٹیز متحرک ہوئیں اور پھر ایک دوسرے کو لگنے والے وائرس نے تو جیسے دم ہی توڑ دیا۔ ایک جانب ہینڈ واشنگ اسٹیشنز سے لوگوں نے ہاتھ دھو کرصفائی کے اصولوں کو اپنایا تو دوسری طرف صحت کی سہولیات مہیا کرتے اداروں میں واش (WASH) پر ہوتے کاموں نے ان اداروں کی کارکردگی کو نئی جلاِ بخش دی۔

فلڈ رین ایمرجنسی کے سلسلے میں کیے جانے والے کام اپنی مثال آپ ہیں ۔ سجاول اور دادو میں ہیلتھ ہائجین سیشن تو ہوئے ہی سیلاب کے خطرات سے بچاﺅ کے طریقوں پر لوگوں کو آگاہ بھی کیا گیا اور فیملیز کو Hygeine Kits بھی دی گئیں،، پانی تو زندگی ہے نا۔ ۔ ۔تو پھر کیونکر نہ ملتا !! واٹر سپلائی اسکیمز ، ہینڈ پمپز اور واٹر ٹرکنگ جیسی Interventions پانی سے وابستہ مسائل کے حل میں کافی حد تک مددگار ثابت ہو رہی ہیں۔

پروجیکٹ کے جاری سفر میں صرف انسانیت کا علم بلند رہا ، لوگوں کے چہروں پر مسکراہٹ آئی تو شفاءفاﺅنڈیشن کی ٹیمز کو لگا محنت کا ثمر مل گیا ہو ،یہ لگن اور محنت ہی تو تھی کہ ٹیمز جب فیلڈ میں جاتیں تو بس پھر کام ہوتا تھا ، کوششیں تھیں کہ بھوک اور پیاس کا احساس تک نہ ہونے دیتیں ، پھر جب تھکہار کر گھر واپس آیا جاتا تو دلوں کا اطمینان نیند کا مزہ دوبالا کردیتا ۔ انسانیت کے راستوں پر چلتے ، روز و شب اپنی مسافت طے کرتے رہے ، لوگوں کا ساتھ رہا ،، تو کہیں چھُوٹ بھی گیا۔ علی مشتاق اور شائستہ نظروں سے اوجھل ہوئے تو طاہرہ ، ضیاء اور یونس مرکوزِ نگاہ تھے۔ ترویج اور تشہیر میں میڈیا نے ایسا ساتھ نبھایا کہ اب تو شہر قائد میں بھی لوگ شفاءفاﺅنڈیشن کو جاننے، پہچاننے لگے ہیں۔ شفاء فاﺅنڈیشن عوامی نیک تمناﺅں کے حصار میں ہے!