ڈونلڈ ٹرمپ اور جیف سیشنز کے درمیان جاری سرد جنگ کا ڈراپ سین، اٹارنی جنرل مستعفی

۰۸ نومبر, ۲۰۱۸ ۹:۲۶ دن

واشنگٹن (92 نیوز) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور اٹارنی جنرل جیف سیشنز کے درمیان جاری سرد جنگ کا ڈراپ سین اور اٹارنی جنرل اپنے عہدے سے مستعفی ہوکر گھر چلے گئے۔ ٹرمپ اور جیف سیشنز کے درمیان امریکی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت کے معاملے پر سخت کشیدگی چل رہی تھی۔

امریکی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت کے حوالے سے  خصوصی وکیل  مائیک ملر کی جانب سے کی جانیوالی  تحقیقات پر  ٹرمپ متعدد بار ناراضگی کا اظہار کرچکے ہیں۔

اٹارنی جنرل جیف سیشنز کی جانب سے خود کو تحقیقات سے الگ کرنے پر بھی ٹرمپ نے متعدد بار انہیں سرعا م تضحیک کا نشانہ بنایا تھا ،جس کے بعد دونوں کے تعلقات سردمہری کی انتہائوں کو چھورہے تھے۔

جیف سیشنز نے صدر ٹرمپ کے نام لکھے گئے خط میں لکھا کہ آپ کے کہنے پر اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا ہے ،بطور اٹارنی جنرل اپنی خدمات پوری ایمانداری سے ادا کرنے کی کوشش کی،ڈیموکریٹک پارٹی کی سینئر رہنما نینسی پیلوسی نے جیف سیشنز کے استعفے کو انکی برطرفی قراردیتے ہوئے اسکی سخت مذمت کی ہے۔

ادھر صدر ٹرمپ نے ٹویٹ  کے ذریعے جیف سیشنز کا استعفیٰ قبول کرنے کا اعلان کیا ،انہوں نے جیف سیشنز کی خدمات کو سراہتے ہوئے انکے  چیف آف سٹاف  میتھیو جی ویٹاکر کو قائم مقام اٹارنی جنرل نامزد کردیا۔

تازہ ترین ویڈیوز