چونیاں میں معصوم بچوں کے قاتل تاحال پولیس کی پہنچ سے دور

۱۹ ستمبر, ۲۰۱۹ ۱۲:۴۴ شام

قصور ( 92 نیوز) چونیاں میں ننھے پھولوں کو مسلنے والے درندے قانون کی گرفت میں نہ آسکے ،تین بچوں8سالہ فیضان ،8سالہ سلمان اور12سالہ علی حسنین کاتعلق ایک ہی محلے سے ہے ۔  نئے تعینات ہونےوالےڈی پی اوقصورزاہد مروت نےجائے وقوعہ کا دورہ کیا اور کہا معصوم  بچوں کے اندوہناک قتل میں ملوث ملزمان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔

چونیاں میں دلخراش واقعے پر پیشرفت  پولیس افسران کے تبادلے ، معطلیوں سے آگے نہ ہو سکی ۔ شہر کی فضا دوسرے روز بھی سوگوار ہے جب کہ معصوم  پھولوں کو مسلنے والے درندے کب  قانون کی گرفت میں آئیں گے ،ہرایک کی زبان پر بس یہی  سوال ہے۔

تین بچوں کا تعلق چونیاں کے ایک ہی محلےغوثیہ آباد سے ہے ۔ 8سالہ فیضان کوتین روز قبل اغوا کیا گیا ،8سالہ سلمان 10اگست کواغوا ہوا ،12سالہ علی حسنین کو 17 اگست کو گھر کے قریب سے اغواکیا گیا۔

محلہ رانا ٹاؤن کے رہائشی عمران کے والدین آج بھی لخت جگر کے منتظر ہیں ۔ رمضان میں 12 سالہ عمران گھر سے دودھ لینے نکلا لیکن لوٹ کر نہ آٰیا،والدین کاکہناہےکہ پولیس نے ایف آئی آر درج کی اور نہ ہی کوئی مدد۔

نئےتعینات ہونےوالےڈی پی اوقصورزاہد مروت کی زیرصدارت چونیاں میں اہم اجلاس ہوا ۔ ڈی پی او نےجائے وقوعہ کا دورہ بھی کیا اور کہا معصوم بچوں کے اندوہناک قتل میں ملوث ملزمان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا، پولیس ٹیمیں دن رات محنت کر رہی ہیں،سفاک قاتلوں کی گرفتاری کےلیے شہری  پولیس کا ساتھ دیں۔

تازہ ترین ویڈیوز