چونیاں میں دو ماہ میں تین بچے اغواء اور زیادتی کے بعد قتل ، ایک لا پتہ

چونیاں ‏ ‏92 نیوز ننھی زینب ‏ قصور ‏ اغوا اور زیادتی
۱۸ ستمبر, ۲۰۱۹ ۱۲:۲۰ شام

چونیاں ( 92 نیوز) ننھی زینب کے قصور میں ایک اور کرب ناک واقعہ  پیش آیا جہاں  دو ماہ میں اغوا اور زیادتی کے بعد تین بچے قتل کر دیے گئے ہیں ۔  ایک بچے کی نعش اور دو بچوں کی ہڈیاں ملیں جبکہ ایک بچہ تاحال لا پتہ ہے ۔  پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق  فیضان کی موت گلہ دبانے سے ہوئی بعد ازاں ، اونچائی سے پھینکا گیا ۔

ننھی زینب کے اندوہناک قتل کے بعد بھی قصور میں درندے آزاد،،مزید چار معصوموں کو نگل گئے ، چونیاں   میں بچے اغواء ہونے پر ورثا چیختے چلاتے رہے ، احتجاج کرکے بے حس حکمرانوں کو جگانے کی کوشش کی ، پولیس کی منتیں کرتے رہے مگر کسی نے بھی غریبوں کی فریاد نہ سنی ، ننھے پھولوں کی لاشیں ملیں تو سب کو ہوش آگیا۔

لاشیں ملنے کے بعد شہر کی فضا سوگوار ہے  ، کارباری مراکز بند ہیں   جب کہ  مشتعل افراد نے  تھانہ سٹی پر پتھراؤ  کیا اور پولیس کے خلاف نعرے بازی کی ۔

معصوم عمران کے والدنے 92 نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  بیٹا گھر سے دکان پر جانے کےلیے نکلا اور پھر کبھی  واپس نہیں آیا،لاش مل گئی۔شدت غم سے نڈھال والدہ نے کہا کہ انہیں ہرحال میں انصاف چاہئے۔

مقتول فیضان کی بہن کا کہناہے کہ درندہ صفت ملزموں کو کیفرکردارتک پہنچایا جائے ، اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ پولیس نے کوئی تعاون نہیں کیا،عدم تحفظ کے باعث بچوں کو اسکول تک نہیں بھیج سکتے ۔

قتل کئے گئے ایک بچے فیضان کی پوسٹمارٹم رپورٹ  92نیوز نے حاصل کر لی  ۔ پوسٹمارٹم رپورٹ کے مطابق فیضان کو  گلا دبا کر قتل کیا گیا،جسم پر تشدد کے نشانات بھی موجود ہیں  ۔

ادھر وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کا کہنا ہے کہ معصوم بچوں کے قتل پر دلی دکھ ہوا ،غمزدہ خاندانوں کو انصاف فراہم کریں گے ، درندہ صفت ملزمان سزا سے نہیں بچ پائیں گے۔

تازہ ترین ویڈیوز