پہلی ای کامرس پالیسی تیار،وفاقی کابینہ کل منظوری دیگی

پہلی ای کامرس پالیسی ‏ وفاقی کابینہ ‏ اسلام آباد روزنامہ 92 نیوز ویب ڈیسک 92 نیوز آن لائن بزنس ‏ ایس ای سی پی
۳۰ ستمبر, ۲۰۱۹ ۱۰:۲۹ دن

اسلام آباد(روزنامہ 92 نیوز)ملکی تاریخ کی پہلی ای کامرس پالیسی منظوری کیلئے کل (منگل کو) وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پیش کی جائیگی۔

آن لائن بزنس کو بھی ایس ای سی پی میں رجسٹرڈ کرانا لازمی قرار دیدیا جائیگا،صارفین کے تحفظ کو یقینی بنانے کے ساتھ جی ایس ٹی سمیت دیگرٹیکسز کا حصول آسان بنایا جائیگا،آن لائن کاروبار کے فروغ کیلئے آسانیاں پیدا کی جا ئینگی،آن لائن کاروبار کرنے والوں کو پاکستان میں اپنا آفس ظاہر کرنا لازمی ہوگا۔

مجوزہ پالیسی سے برآمدات بڑھنے کے ساتھ روزگار کے نئے مواقع پیدا ہونے کا امکان ہے ۔وزارت تجارت نے ملکی تاریخ کی پہلی ای کامرس پالیسی کا مسودہ تیار کرلیا، جسے منظوری کیلئے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پیش کیا جائیگا۔

مجوزہ پالیسی کے تحت وزارت تجارت نے ای کامرس کو ریگولیٹ کرنے کیلئے مختلف تجاویز دی ہیں ،مجوزہ پالیسی کے تحت ملک کے اندر اور بین الاقوامی سرحد پر ٹرانزیکشن کیلئے ای پیمنٹ انفراسٹرکچر متعارف کرایا جائیگا، ادائیگیوں کیلئے بین الاقوامی گیٹ وے قائم کرنے کی بھی تجویز ہے ۔

پہلی ای کامرس پالیسی مسودے کے تحت آن لائن بزنس کو بھی ایس ای سی پی میں رجسٹرڈ کرانا ہوگا، پالیسی پر عملدرآمد کیلئے مجوزہ پالیسی کے مطابق ای کامرس کو بروئے کار لاتے ہوئے برآمدات کو بڑھایا جائیگا، جس سے ملک میں روز گار کے نئے مواقع پیدا ہونگے ۔

پالیسی کے مسودہ میں ملکی اور غیرملکی ٹرانزیکشنز کیلئے موثر ای پیمنٹ انفرااسٹرکچر کی تجویز پیش کی گئی ہے جبکہ ادائیگیوںکیلئے بین الاقوامی گیٹ وے قائم کرنے کی تجویز کو بھی شامل کیا گیا ہے ۔اسی طرح پالیسی میں آن لائن کاروبار کو لازمی ایس ای سی پی میں رجسٹرڈ کرنے کی تجویز ہے جبکہ ناکارہ اشیا ءکو ری ایکسپورٹ کیلئے اجازت دینے کی تجویز بھی دی گئی ہے ۔

وزارت تجارت کی جانب سے بنائی گئی اس پالیسی پر عمل درآ مدکیلئے وفاق اور صوبوں میں سٹیئرنگ کمیٹیوں کے قیام کی تجویز بھی شامل ہے ۔ اعداد و شمارمیں بتایا گیا ہے کہ ملک میں ای کامرس میں بتدریج اضافہ ہوا اور 2017 ء کے 51ارب روپے کے مقابلے میں 2018 ء میں ای کامرس کا حجم99ارب روپے تک پہنچ گیا۔

آن لائن کاروبار کی رجسٹریشن،ملک میںدفتر بنانا لازم

ای کامرس کے ساتھ منسلک آن لائن ادائیگیوں کے خدشات کی بنا پر بلند لاگت کے مسئلے سے پوری طرح واقف ہے تاہم امید ہے کہ دھوکہ دہی کی روک تھام کا زیر تکمیل نیا مکینزم مرچنٹس اور صارفین کے نقصانات کو کم کرنے میں مدد اور تحفظ فراہم کرے گا۔

ای کامرس ترقی پذیر ملک کے تاجروں کو معمول کے تجارتی چینلز پر قابو پانے میں مدد مل سکتی ہے  ، کمپنیز ایکٹ،2017 اور ضروری قواعد میں ضروری ترمیم اور ضابطہ طے کرکے صوبائی سیلز ٹیکس کے مقاصد کیلئے آن لائن کاروبار کی حوصلہ افزائی ہوگی اورڈبل ٹیکس عائد کرنے سے بچنے کیلئے پالیسیوں کو ہم آہنگ کیا جائیگاجبکہ جی ایس ٹی سمیت ٹیکس کے طریقہ کار کو آسان بنانے کیلئے اقدامات کئے جائینگے ۔

تازہ ترین ویڈیوز