Friday, January 22, 2021
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

پشاور بی آرٹی میں 2 ارب روپے کی بے قاعدگیوں کا انکشاف

پشاور بی آرٹی میں 2 ارب روپے کی بے قاعدگیوں کا انکشاف
December 5, 2020

پشاور (92 نیوز) خیبرپختونخوا حکومت کے فلیگ شپ منصوبے بی آرٹی میں دو ارب روپے کی بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے۔ آڈٹ رپورٹ کے مطابق میگا پراجیکٹ کی ابتدائی لاگت 49 اربے سے بڑھ کر 66 ارب روپے تک پہنچی، بی آر ٹی بسوں کو چلانے کےلئے ایک ارب روپے سے زائد سبسڈی کی ضرورت ہے۔

خیبرپختونخوا حکومت کے پشاور میں جدید سفری سہولت کے منصوبے بی آر ٹی میں بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے ،  آڈیٹرجنرل آف پاکستان کی جانب سے بی آر ٹی منصوبے میں بے ضابطگیوں کے حوالے سے رپورٹ خیبرپختونخوا اسمبلی میں جمع کرادی گئی ہے ۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ میگا پراجیکٹ کے ڈیزائن میں بار بار تبدیلی کے باعث منصوبے کی ابتدائی لاگت میں 17 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔ ابتدائی لاگت 49 ارب روپے تھی جو ڈیزائن کی تبدیلی کے بعد بڑھ کر 66 ارب 66کروڑ تک پہنچ گئی ۔

آڈٹ رپورٹ کے مطابق تعمیرات کا ملبہ بیچا گیا مگر  پانچ کروڑ روپے کی وصولی ٹھیکیدار سے نہ ہو سکی، منصوبے میں کام کرنے والے افسران کو ڈیڑھ کروڑ روپے کی اضافی تنخواہیں دی گئیں ، صرف یہی نہیں اضافی منصوبے میں اضافی ملازمین کو کھپایا گیا جس سے خزانے کو 2 کروڑ 79لاکھ روپے کا ٹیکہ لگا ۔ بی آر ٹی کے لئے ستون کی تعمیر پر 20کروڑ روپے اضافی ادا کرنے پر آڈٹ کرنے والوں نے اعتراض کیا ہے ۔

مردان اور ایبٹ آباد کی پنک بس کے لئے 17 لاکھ روپے بی آر ٹی منصوبے سے ادا کئے گئے ۔

آڈیٹر جنرل رپورٹ میں یہ بھی خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ جب تک حکومت بی آر ٹی بسیں چلانے کے لئےڈیڑھ ارب روپے سالانہ کی سبسڈی ادا نہیں کرتی  منصوبے کے لئے لیا گیا قرضہ واپس کرنا ممکن نہیں ہو گا ۔