Tuesday, April 13, 2021
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

پاکستان اور بھارت کے ڈی جی ایم اوز کا ہاٹ لائن پر رابطہ ، کور ایشوز اور تحفظات کو حل کرنے پر اتفاق

پاکستان اور بھارت کے ڈی جی ایم اوز کا ہاٹ لائن پر رابطہ ، کور ایشوز اور تحفظات کو حل کرنے پر اتفاق
February 25, 2021

راولپنڈی (92 نیوز) پاکستان اور بھارت کے ڈی جی ایم اوز نے ہاٹ لائن پر رابطہ کیا۔ دونوں اطراف کا باہمی مفاد اور امن کی خاطر کور ایشوز اور تحفظات کو حل کرنے پر اتفاق ہوا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے 92 نیوز سے خصوصی گفتگو میں کہا ہاٹ لائن کی سطح پر رابطہ ہوا ہے۔ ریگولر رابطہ کیا جاتا ہے۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان 1987 سے رابطہ جاری ہے۔  ایمرجنسی ضرورت بھی پڑ جائے تو ہاٹ لائن پر رابطہ کیا جاتا ہے۔ ایل او سی اور دیگر سیکٹرز کی صورتحال پر بات چیت اچھے ماحول میں ہوئی۔ ایل او سی پر فائر بندی کے معاہدوں اور باہمی مفاہمت پر سختی سے عمل پیرا ہونے کا اعادہ کیا گیا۔ پاکستان اور بھارت کے ڈی جی ایم اوز نے اتفاق کیا کہ 2003 میں ہونے والے سمجھوتے پر عملدرآمد کیا جائے۔

 ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق ایل او سی پر سیزفائر کے لیے 2003 میں ایک اور انڈراسٹینڈنگ ہوئی۔ 2014 سے ایل او سی پر سیزفائر کی خلاف ورزیوں میں تیزی آگئی تھی۔ 2018 میں سیزفائر کی خلاف ورزیوں میں سے سب سے زیادہ جانی نقصان ہوا۔  2003  کے بعد ابتک 13500 سے زائد سیز فائر کی خلاف ورزیاں ہوئیں۔   2019 میں سب سے زیادہ سیز فائر کی خلاف ورزیاں ہوئیں۔ ایل او سی پر سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی سے عام شہریوں بچوں اور خواتین کی اموات  ہورہی تھیں۔ سیز فائر کی خلاف ورزیوں سے 90 فیصد اموات 2014 سے 2021 کے دوران  ہوئیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کے مطابق 2003 کی انڈر اسٹینڈنگ کے تحت ایل او سی کی 500 میٹر کی حدود میں کوئی نئی تعمیر نہیں ہو گی۔ ایک دوسرے کی چوکی کو براہ راست ٹارگٹ نہیں کیا جائے گا۔ 2003 کی انڈراسٹینڈنگ پر عملدرآمد کے لیے آج اتفاق ہوا ہے۔