ٹیکس محصولات میں 66 ارب روپے کا اضافہ ہوا ، ایف بی آر



ایف بی آر کمرشل رہائشی جائیدادوں فئیر مارکیٹ ویلیو ٹیکس
۰۵ فروری, ۲۰۱۹ ۷:۰۷ شام

 اسلام اباد(92 نیوز) ایف بی آر نے اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ ٹیکس محصولات میں گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں 66 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔

ایف بی آر اعلامیہ کے مطابق کسٹم ڈیوٹی کے محصولات 330 ارب سے بڑھ کر 390 ارب روپے ہو گئے جبکہ انکم ٹیکس کے محصولات 155 ارب روپے رہے۔ رواں سال کوئی اضافہ نہیں ہوا۔

سیلز ٹیکس کے محصولات 799 ارب سے بڑھ کر 805 ارب روپے ہوگئے، صرف 6 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔ فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کے محصولات 105 ارب روپے سے بڑھ کر 117 ارب روپے ہو گئے ۔

دوسری جانب وزارت خزانہ ذرائع کا کہنا ہے کہ مقامی مارکیٹ میں ٹیکس محصولات جمع کرنے کی ایف بی آر کی کوششیں ناکام ہو گئیں۔ ایف بی آر محصولات میں رواں مالی سال 4 ہزار ارب سے زیادہ جمع ہونے کی توقع نہیں۔

محصولات کا ہدف 4 ہزار 4 سو ارب سے کم کرکے 4 ہزار ارب روپے کرنے کی درخواست رواں ہفتے کردی جائے گی۔

درآمدات پرٹیکس میں اضافہ 59 ارب روپے رہا ۔ درآمدات پر انکم ٹیکس میں اضافہ 9 ارب روپے رہا جبکہ مقامی مارکیٹ میں انکم ٹیکس محصولات میں 8.5 ارب روپے کمی آئی۔

مقامی مارکیٹ میں سیلز ٹیکس 3 ارب بڑھا اور فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کے محصولات میں 12 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔ وزارت خزانہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس شرح سے درآمدات پر ٹیکس میں اضافہ باعث تشویش ہے۔



تازہ ترین ویڈیوز