نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مسجد میں فائرنگ، انچاس افراد شہید ، درجنوں زخمی

نیوزی لینڈ کرائسٹ چرچ مسجد فائرنگ عینی شاہدین پولیس خود کار رائفل
۱۵ مارچ, ۲۰۱۹ ۸:۱۱ دن

 ویلنگٹن (92 نیوز) نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مسجد میں فائرنگ کا واقعہ پیش آیا جس میں انچاس افراد شہید جبکہ درجنوں زخمی ہو گئے۔

 کرائسٹ چرچ میں دو مساجد النور اور linwood میں ہولناک فائرنگ کے واقعات پیش آئے۔ سفاک حملہ آوروں نے جمعہ کی نماز ادا کرنے والے افراد کو گولیوں سے چھلنی کر ڈالا۔

واقعے میں ملوث ہونے کے شبے میں خاتون سمیت چار افراد کو حراست میں لیا گیا ہے جن میں ایک بیس سالہ نوجوان پر قتل کی فرد جرم بھی عائد کردی گئی ہے۔ پولیس نے وقوعہ کے قریب کھڑی دو گاڑیوں میں نصب بموں کو بھی ناکارہ بنا دیا۔ گاڑی سے بھاری اسلحہ اور بارود بھی برآمد کیا گیا ہے۔

وزیراعظم جیسنڈا آرڈن کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ میں پرتشدد واقعات کی کوئی جگہ نہیں۔ مساجد پر حملہ دہشت گردی کے سوا کچھ نہیں۔

وزیراعظم جیسنڈا آرڈن کا مزید کہنا تھا کہ ذمہ داروں کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے گا۔ حراست میں لیے گئے افراد کے حوالے سے انھوں نے بتایا کہ ان میں سے کوئی بھی مشتبہ افراد کی فہرست میں شامل نہیں تھا۔

وزیر اعظم نے اعلان کیا کہ انتہا پسند سوچ کے حامل لوگوں کے لئے نیوزی لینڈ میں کوئی جگہ نہیں۔

نیوزی لینڈ میں پیش آنے والا یہ دہشتگردی کا پہلا واقعہ ہے جس نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ کرائسٹ چرچ میں تمام مذہبی مقامات پر ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا۔

تازہ ترین ویڈیوز