Thursday, November 26, 2020
Urdu Web Newspaper 92news Live(UK) 92news Live(PK)
Urdu Web Newspaper
92news Live(UK) 92news Live(PK)
Hot Topics

مودی کی جنرل اسمبلی میں تقریرتضادات کا مجموعہ

مودی کی جنرل اسمبلی میں تقریرتضادات کا مجموعہ
September 28, 2019 12:01 am

نیویارک (92 نیوز) بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تقریرتضادات سے بھرپور، حقائق سے متصادم اور غلط بیانیوں کے مجموعے کے سوا کچھ نہیں تھی، انہوں نے جو کچھ بھی عالمی برادری کے سامنے کہا بھارت میں اس کے برعکس ہو رہا ہے۔ مودی اسی انتہا پسند تنظیم کا تاحیات رکن ہے جس کے ایک کارکن نے موہن داس کرم چند گاندھی کو قتل کیا، آج بھی آر ایس ایس، بجرنگ دل اور بی جے پی کے انتہا پسند گاندھی کے قاتل نتھو رام گوڈ سے کا جشن مناتے ہیں اور گاندھی کے مجسمے کی توہین کرتے ہیں۔ مودی نے چھاتی چوڑی کرکے 11 کروڑ بیت الخلا بنانے کی بات کی۔ غیر جانبدار تنظیموں اور میڈیا کی اپنی رپورٹس ہیں کہ مودی نے کچھ بیت الخلا تو بنا دئیے لیکن وہاں پانی اور صفائی کا کوئی انتظام نہیں، کروڑوں بھارتیوں کے پاس آج بھی بیت الخلا کی سہولت موجود نہیں۔ بھارتی وزیراعظم نے غربت کے خاتمے اورصحت کی سہولیات کی بڑھک ماردی۔ حقیت یہ ہے کہ بھارتی میڈیا سمیت پوری میڈیا میں بھارت کی گرتی ہوئی معیشت پربات ہو رہی ہے۔ ترقی کی آٹھ فیصد شرح 5 فیصد پر آگئی ہے، بھارتی معیشت تیزی سے نیچے جا رہی ہے۔ بے روزگاری 4 دہائیوں کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے، کسان خودکشیاں کر رہے ہیں۔ نوکریاں نہیں مل رہی ہیں۔ یہ بھارت کی اپنی سرکاری رپورٹ ہے۔ امن کی بھاشا ایک انتہا پسند اور فاشسٹ کے منہ سے اچھی نہیں لگتی،موصوف کہہ کیا رہے ہیں اور ان کے نام نہاد سیکولر بھارت میں ہو کیا رہا ہے، مقبوضہ کشمیر میں بربریت جاری ہے،آسام میں اقلیتی مسلمانوں کے ساتھ مظالم ہورہے ہیں ۔بھارت کی درجنوں ریاستوں میں جاری علیحدگی کی تحریک، مودی کی بغل میں چھری اور منہ میں رام رام کے مترادف ہے۔ بھارتی وزیراعظم نے اقوام متحدہ میں دنیا کو دھوکہ دینے کی ناکام کوشش کی لیکن عالمی برادی اتنی بے خبر نہیں جتنا مودی سمجھتے ہیں۔

Contact Details