ملکی تاریخ میں پہلی بار ایک ہزار ارب روپے کا محصولاتی شارٹ فال

۱۹ نومبر, ۲۰۱۹ ۲:۱۶ شام

اسلام آباد (92 نیوز) پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ایک ہزار ارب روپے کے محصولاتی شارٹ فال کا سامنا۔ ذرائع ایف بی آر کے مطابق رواں مالی سال کا ٹارگٹ 5 ہزار500 ارب روپے سے کم کیے جانے کا عمل شروع کردیا گیا۔ رواں مالی سال کا ٹارگٹ 4 ہزار 400 ارب تک کم ہونے کا امکان ہے۔

ایف بی آر ذرائع کے مطابق محصولات میں پہلے 4 ماہ میں 16 فیصد اضافہ ہوا، اس اضافے کی بنیاد پر مالی سال کے آخر تک 5 ہزار 5 سو ارب روپے جمع ہونے کا امکان ترک کردیا گیا۔ جولائی تا اکتوبر شارٹ فال 162 ارب روپے رہا۔ نومبر کے آخر تک یہ شارٹ فال بڑھ کر 280 ارب روپے ہونے کا اندیشہ ہے۔

ایف بی آر ذرائع کے مطابق سال کے آخر تک شارٹ فال 1 ہزار روپے تک بڑھنے کا اندیشہ ہے، ٹیکس وصولیوں کے بحران سے نمٹنے کے لیے نئے اقدامات شروع کردیئے گئے۔

ذرائع کا کہنا بے نامی اور جعلی دستاویزات کی بنیاد پر چلنے والے بینک اکاؤنٹس منجمد کئیے جانے کا امکان ہے، اسمگلنگ کے لیے استعمال ہونیوالی شاہراہوں کی نگرانی سخت کردی گئی، سمگل شدہ مال کی مارکیٹوں پر چھاپے مارنے کے لیے اینٹی اسمگلنگ سٹیئرنگ کمیٹی کے فیصلے لاگو کردیئے گئے۔

غیر رجسٹرڈ ہول سیلرز، سٹاکسٹس اور آڑھتیوں کی سیلز ٹیکس رجسٹریشن کا عمل تیز کردیا گیا، آئی ایم ایف نے بھی محصولات میں نمایاں کمی کا نوٹس لے لیا۔

تازہ ترین ویڈیوز