مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم پر  تشویش ہے ، ایرانی سپریم لیڈر

مقبوضہ کشمیر ‏ بھارتی مظالم ‏ ایرانی سپریم لیڈر تہران ‏ ویب ڈیسک ایران ‏ سپریم لیڈر ‏ بھارت ایرانی صدر ‏ حسن روحانی
۲۲ اگست, ۲۰۱۹ ۱۱:۳۸ دن

تہران (ویب ڈیسک) ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے مقبوضہ کشمیر  کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بھارت سے مقبوضہ کشمیر پر دباؤ ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے ۔

انہوں نے  تہران میں ایرانی صدر حسن روحانی اور ان کے ارکان  کابینہ کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کو کشمیر میں مسلمانوں کی حالت زار پرتشویش ہے ،ہم بھارتی حکومت سے کشمیر کے بے قصورلوگوں سے منصفانہ سلوک کی امید کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا بھارتی حکومت کشمیر کے مسلمانوں کو ظلم اور بدمعاشی سے بچائے ، بھارت مقبوضہ وادی کیلئے شفاف پالیسی اختیار کرے ۔ پاکستان اور بھارت کو اُلجھائے رکھنے کیلئے برطانیہ نے جان بوجھ کر مسئلہ کشمیر کو حل نہیں کیا۔

ایرانی میڈیا نے بھی مقبوضہ کشمیر کی حالت کو بد ترین قرار دیا اور کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال کرے اور کرفیو کو ختم کرے  ، علاوہ ازیں ایران کی مجلس شوریٰ اسلامی کے رکن علی مطہری نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ایران سمیت تمام مسلمان ممالک پر اہم ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔

کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق علی مطہری نے مجلس شوریٰ اسلامی کے جاری اجلاس میں کشمیر کی حمایت میں ایک یادداشت پیش کرتے ہوئے کہا ہم مسلمانان عالم کی تقدیر سے لاتعلق نہیں رہ سکتے ہیں۔ یادداشت میں کہاگیا ہے کہ بھارتی حکومت کی طرف سے جموں وکشمیر کی خودمختاری ختم کرنے کا اقدام ایک اہم مسئلہ ہے جس سے مسلمان ممالک لاتعلق نہ رہیں۔

علی مطہری نے مزید کہاکہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ایران کی ذمہ داری بہت بڑی ہے ۔

ادھر  کینیڈا نے مقبوضہ کشمیر میں مظالم پر5 سابق بھارتی فوجی اور2 انٹیلی جنس افسروں کو ویز ا دینے سے انکار کردیا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق کینیڈین امیگریشن آفس نے بھارت کے 2سابق لیفٹیننٹ جنرلز،3 سابق بریگیڈئیرز اور2 انٹیلی جنس افسروں کو ویزا دینے سے انکار کیا ہے ۔

کینیڈین امیگریشن حکام کا موقف ہے کہ سابق بھارتی فوجی مقبوضہ کشمیر میں مظالم میں ملوث رہے ہیں اسلئے ان کو ویزے نہیں دیئے جارہے ،ان میں لیفٹیننٹ جنرل امریت سنگھ واہیا،سابق ڈائریکٹر جنرل ملٹر ی آپریشنز، سابق ماسٹر کوارٹرز جنرل ،آر ایس گل ریٹائرڈ ڈی آئی جی سی آر پی ایف،ممبرآف آرمز سروس ٹربیونل شامل ہیں ۔

دوسری جانب آر ایس گل کا کہنا ہے کہ کینیڈا کی طرف سے خط موصول ہونے پر مجھے زبردست دھچکا لگا ہے ۔

تازہ ترین ویڈیوز