لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی 28 مئی کو جی ایچ کیو میں طلب

۲۶ مئی, ۲۰۱۸ ۸:۱۱ دن

راولپنڈی (92 نیوز) آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کا لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی کی کتاب پر بڑا فیصلہ سامنے آ گیا جس کے مطابق اسد درانی کو 28 مئی کو جی ایچ کیو میں طلب کر لیا گیا۔

پاک فوج کے ترجمان نے کہا کہ آئی ایس آئی کے سابق سربراہ لیفٹیننٹ جنرل اسد درانی کو را کے سابق سربراہ کے ساتھ مل کر کتاب لکھنے کی وضاحت کے لیے جی ایچ کیوطلب کیا گیا ہے۔

فوج کے شعبۂ تعلقات عامہ کے ترجمان میجرجنرل آصف غفور کی جانب سے کی گئی ٹویٹ میں کہا گیا کہ لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی خود سے وابستہ ان بیانات کی وضاحت پیش کریں جن کے مطابق انہوں نے بھارتی خفیہ ایجنسی را کے سابق سربراہ کے ساتھ مل کر ‘سپائی کرونکلز را، آئی ایس آئی اینڈ دی الیوژن آف پیس’ نامی کتاب لکھی ہے۔

ٹویٹ میں مزید کہا گیا کہ اسد درانی کے اس عمل کو فوجی ضابطہ کار کی خلاف ورزی کے طور پر لیا گیا ہے جس کا اطلاق تمام حاضر سروس اور ریٹائرڈ فوجی اہلکاروں پر ہوتا ہے ۔

میجرجنرل آصف غفور نے 5ا کتوبر 2017 کو پریس بریفنگ دیتے ہوئے کہا تھا کہ کوئی بھی فرد ، حتیٰ کہ آرمی چیف بھی آرمی سے اوپرنہیں ہیں۔ آرمی پاکستان سے اوپرنہیں ہے ، کوئی فرد اور ادارہ پاکستان سے بالاترنہیں ہے۔

قومی حلقوں نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے اس بڑے اقدام کو بروقت اور درست قرار دیا ہے۔ کوئی بھی شخص چاہے ریٹائرڈ ہو یا حاضر سروس۔ احتساب سے بالاتر نہیں، پاک فوج نے اس کی مثال قائم کر دی۔

ادھر لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ امجد شعیب نے کہا اسد درانی وضاحت نہ دے سکے تو ان کے خلاف کارروائی ہو گی۔

میجرجنرل ریٹائرڈ اعجاز اعوان نے کہا کہ کوئی بھی شخص قانون سے بالاترنہیں۔

تازہ ترین ویڈیوز