صلاح الدین موت سے قبل جسمانی تشدد کا نشانہ بنا، فرانزک رپورٹ آ گئی

پولیس حراست صلاح الدین سپرد خاک کامونکی ‏ ‏92 نیوز رحیم یارخان ‏ ذہنی معذور ‏ اے ٹی ایم
۱۷ ستمبر, ۲۰۱۹ ۶:۵۷ شام

 رحیم یارخان (92 نیوز) رحیم یارخان میں پولیس کے مبینہ تشدد سے جاں بحق صلاح الدین کی فرانزک رپورٹ آگئی۔ رپورٹ کے مطابق صلاح الدین کو جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

فرانزک رپورٹ میں بتایا گیا کہ دائیں بازو اور پیٹ کے بائیں حصہ پر تشدد کے نشانات پائے گئے۔ خون کے لوتھڑے جمے ہوئے تھے۔ صلاح الدین کو پھیپھڑوں کی بیماری تھی۔ میڈیکل بورڈ کی رپورٹ میں موت کی وجہ بیان نہیں کی گئی۔ موت میں تشدد اور پھیپھڑوں کی بیماری کے ساتھ مل کر نیورجینک شاک سمیت کوئی بھی وجہ ہو سکتی ہے۔

قبل ازیں صلاح الدین کے والد نے پوسٹمارٹم رپورٹ پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے جوڈیشل مجسٹریٹ سے قبر کشائی کی درخواست کی تھی۔

صلاح الدین کے والد افضال نے جوڈیشل مجسٹریٹ رحیم یار خان کی عدالت میں قبر کشائی کی درخواست دائر کی تھی جس میں صوبائی میڈیکل بورڈ سے لاش پر تشدد کے نشانات کو  بھی دوبارہ نوٹ کرنے کی استدعا کی گئی تھی ۔

وکیل کے توسط سے جمع کرائی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ پوسٹمارٹم رپورٹ میں دانستہ طور پر تشدد کی نشاندہی نہیں کی گئی ، صلاح الدین کی قبر کشائی کی اجازت دی جائے۔

رحیم یار خان میں صلاح الدین کی اے ٹی ایم سے کارڈ چوری کرنے کی سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آئی تھی  جس پر پولیس نے ملزم کو حراست میں لے لیا ،تاہم چند روز بعد پولیس کے مبینہ تشدد سے صلاح الدین کی موت واقع ہو گئی تھی۔

تازہ ترین ویڈیوز