تاجروں نے حکومت کی مجوزہ فکسڈ ٹیکس اسکیم مسترد کر دی


تاجروں حکومت مجوزہ فکسڈ ٹیکس اسکیم مسترد
02 اگست, 2019 6:30 شام

 لاہور (92 نیوز) تاجروں نے حکومت کی مجوزہ فکسڈ ٹیکس اسکیم مسترد کردی ۔ نعیم میر نے اسکیم کو بھوونڈا مذاق اور ناقابل عمل قراردے دیا۔

لاہور پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آل پاکستان انجمن تاجران کے عہدیدار نعیم میر نے حکومتی فکسڈ ٹیکس اسکیم کو تاجروں کےساتھ بھونڈا مذاق قراردے دیا ۔ انہوں نے کہا رقبے کے اعتبار سے ٹیکس نظام کا نفاذ قابل عمل نہیں ۔ نعیم میر نے فکسڈ اسکیم کا مسودہ بھی پھاڑ دیا۔

نعیم میر کا کہنا تھا کہ ٹیکسوں کی بھرمار کی وجہ سے کوئی پرسان حال نہیں۔ تمام چھوٹے دکانداروں نے ہول سیلروں کو آڈر دینا بند کر دئیے ہیں۔ آنے والے دنوں میں گھی آٹے جیسی چیزوں کی بندش کا خدشہ ہے۔

دیگر تاجر رہنماؤں کا کہنا تھا کہ اسکیم میں بجلی کی قیمت کے بجائے صرف شدہ یونٹ کی حد مقرر کی جانی چاہیے ۔ یہ اسکیم صرف 2 سال کے لئے ہے۔ بے یقینی کی کیفیت برقرار رہے گی۔ نقصان کی صورت میں 5۔1 فیصد ٹرن اوور ٹیکس لازمی جمع کروانا ہو گا۔

تازہ ترین ویڈیوز

Oops, something went wrong.