بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد کی زمین ہندو انتہا پسندوں کو دے دی

۰۹ نومبر, ۲۰۱۹ ۱۲:۱۸ شام

 نیو دہلی (92 نیوز) بھارتی سپریم کورٹ نے 1992 میں شہید کی گئی بابری مسجد کی زمین ہندو انتہا پسندوں کو دے دی اور حکومتی سرپرستی میں مندر تعمیر کرانے کا فیصلہ کر لیا۔

بھارتی سپریم کورٹ نے ریمارکس دیے کہ مسلمانوں کو مسجد کی تعمیر کیلئے ایودھیا میں متبادل جگہ دی جائے گی۔ عدالت نے شیعہ وقف بورڈ کی درخواست بھی مسترد کر دی ۔

بھارتی سپریم کورٹ نے مزید ریمارکس دیے مسلمان متنازعہ جگہ کو بابری مسجد اور ہندو رام جنم بھومی کہتے ہیں۔ متنازعہ جگہ ہمیشہ سے مسلمانوں کی ملکیت میں تھی۔ مسلمانوں نے کبھی بھی وہاں نماز پڑھنا نہیں روکی۔ اندرونی حصے پر مسلمان نماز ادا کرتے تھے ۔ باہر چبوترے پر ہندو پوجا کرتے تھے۔ مسلمان اور ہندو فریق، دونوں کا دعویٰ ایک جیسا ہے۔

تازہ ترین ویڈیوز