برطانوی تاریخ میں پہلی بارتوہین پارلیمان کی تحریک منظور



۰۵ دسمبر, ۲۰۱۸ ۱۰:۱۱ دن

لندن ( 92 نیوز) برطانوی تاریخ میں پہلی بارتوہین پارلیمان کی تحریک منظور کر لیا گیا ، حکومت نے  بریگزٹ پر قانونی مشورہ مکمل  کرنےکے بعد اب شائع کرنے کا فیصلہ کر لیا ۔ ارکان پارلیمنٹ کو بریگزٹ ڈیل مسترد ہونے کی صورت میں پلان بی کا حق بھی حاصل ہے۔ادھر بریگزٹ کے حامی یوکے انڈی پنڈنس پارٹی کے شریک بانی نائیجل فراج نے استعفیٰ دیدیا۔

برطانوی حکومت کی  بریگزٹ ڈیل کی منظوری ہونے کا امکان مزید معدوم ہوگیا، ۔ ڈیل سے متعلق قانونی مشورہ شائع نہ کرنے پرتاریخ میں پہلی مرتبہ حکومت کو توہین پارلیمنٹ کا مرتکب قرار دیاگیا،ڈیل  مسترد ہونے کی صورت میں  اگلے اقدام کا اختیاربھی پارلیمنٹ نے حاصل کرلیا۔

برطانوی پارلیمنٹ میں  یورپی یونین سے بریگزٹ  معاہدے پر بحث کا آغاز  ہوا تو پہلے ہی روز  وزیر اعظم ٹیریزا مے کو شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا،  ڈیل سے متعلق قانونی مشورہ شائع نہ کرنے پر حکومت کو توہین  پارلیمنٹ کا مرتکب قرار دیا گیا،جس کے حق میں 311 اور مخالفت میں 293 ووٹ پڑے ۔ خود  کنزرویٹر پارٹی کے منحرف  ارکان  اور اتحادی جماعت ڈیموکریٹک یونیننسٹس نے اپوزیشن لیبر پارٹی کا ساتھ دیا۔

ٹیریزامے کی مشکلات یہی پر ختم نہیں ہوئیں  یورپی یونین سے الحاق کے حامی رکن ڈومینک گریوو  اور 26 باغی ارکان  نے اپوزیشن سے ملکر  پلان بی کا حق  بھی حاصل کرلیا، اس کے تحت اگر  بریگزٹ ڈیل مسترد ہوتی ہے تو    اگلے اقدام کا فیصلہ پارلیمنٹ کرے گی  ۔

وزیر اعظم ٹریزامے نے پارلیمنٹ سے خطاب  میں ارکان  سے اپیل کی کہ وہ   تمام  اختلافات بالائے طاق رکھتے ہوئے   برطانوی عوام کے فیصلے کا احترام کریں ۔

گیارہ دسمبر کو  پارلیمنٹ میں  بریگزٹ  ڈیل پر اہم ووٹنگ ہونے جارہی ہے ۔



تازہ ترین ویڈیوز