ایم ٹی آئی ایکٹ، پنجاب میں ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری، اسپتالوں کی او پی ڈیز بند

ایم ٹی آئی ایکٹ، پنجاب، ڈاکٹر زکی ہڑتال، اسپتالوں، او پی ڈیز بند لاہور، 92 نیوز
۲۲ اکتوبر, ۲۰۱۹ ۲:۴۸ شام

لاہور (92 نیوز) ایم ٹی آئی ایکٹ کے خلاف پنجاب بھر میں ڈاکٹرز کی ہڑتال کا سلسلہ جاری ہے، لاہور، فیصل آباد، ملتان سمیت شہر شہر سرکاری اسپتالوں کی او پی ڈیز بدستور بند جبکہ آپریشن تعطل کا شکار ہیں۔ ہزاروں مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے، پرائیویٹ اسپتالوں میں مہنگے علاج کروانے پر مجبورہوگئے۔

پنجاب بھر کے تمام سرکاری اسپتالوں میں آئوٹ ڈور سروسز بارہویں روز بھی معطل ہے، احتجاج کرنے والوں میں ینگ ڈاکٹرز، کنسلٹنٹس، پیرامیڈیکل اسٹاف، نرسز اور دیگر عملہ شامل ہے۔ سروسزاسپتال، جناح، میو، شیخ زاید، پی آئی سی، چلڈرن، جنرل اسپتال، گنگا رام میں کام چھوڑ ہڑتال جاری ہے۔

لاہور سمیت پنجاب کی تمام بڑی شاہراہوں پر دھرنے شروع ہونے لگے۔ ینگ ڈاکٹرز کا صوبے کی تمام بڑی شاہراہیں 10 سے 3 بجے تک بند رکھنے کا اعلان کیا جس کے تحت کینال روڈ، فیروزپور روڈ، جیل روڈ، کوئینز روڈ ڈاکٹرز نے بلاک کئے رکھے۔

لاہو ر میں جناح اسپتال کے باہر گرینڈ ہیلتھ الائنس نے بھرپور احتجاج کیا، ایم ٹی آئی ایکٹ کا نفاذ نا منظور کے نعرے لگائے، چیئرمین گرینڈ ہیلتھ الا ئنس ڈاکٹر شاہد چودھری کے خلاف شو کاز نوٹس واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔ مظاہرین کا کہنا ہے کہ اگر دو دن میں نوٹس واپس نہیں لیا گیا تو اسپتال کی ان ڈور سروسز بھی معطل کر دی جائے گئی۔

گرینڈ ہیلتھ الائنس کا کہنا ہے کہ ناکا م ڈاکٹر کو وزیر صحت لگادیا گیا،گرینڈ ہیلتھ الائنس وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کی جانب سے ڈاکٹروں کی تذلیل پر مبنی القابات سے پکارا جا رہا ہے، ان کی این جی او کوملنے والی گرانٹ کا آڈٹ کروایا جائے۔

مظاہرین کا کہناتھاا یم ٹی آئی ایکٹ کو کسی صورت نافذ نہیں ہونے دیں گے، حکومت اپنا فیصلہ واپس لے اور اد کالے قانون کو بند کرے۔

ادھر خیبرپختونخوا کے سرکاری اسپتالوں میں بھی ڈاکٹرز کی ہڑتال 27ویں روز میں داخل ہوگئی۔

تازہ ترین ویڈیوز