اکتوبر میں صوبوں میں مشترکہ جلسے،جنوری میں اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ کیا جائے گا،اپوزیشن


APC 2
20 ستمبر, 2020 10:35 شام

اسلام آباد ( 92 نیوز) اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس کے بعد رہنماؤں کی نیوز کانفرنس میں اپوزیشن رہنماؤں نے اکتوبر میں صوبوں میں مشترکہ جلسے،جنوری میں اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ کا اعلان کیا، رہنماؤ ں نے وزیر اعظم عمران خان سے استعفے کا مطالبہ بھی کر دیا۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ مشترکہ لائحہ عمل میں استعفوں کا آپشن بھی شامل ہے ،جنوری 2021 میں اسلام آباد کی طرف فیصلہ کن لانگ مارچ ہو گا۔دسمبر سے بڑے عوامی مظاہرے ہونگے اور  ملک گیر احتجاج کیا جائے گا،تمام صوبوں میں جلسے اور ریلیاں نکالی جائیں گی ۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اجلاس نے فیصلہ کیا ہے کہ میثاق جمہوریت پر نظر ثانی کی جائے گی ،وزیر اعظم عمران خان کے فوری استعفے کا مطالبہ کرتے ہیں ۔

شہباز شریف نے کہا کہ اے پی سی میں فیصلے پوری مشاورت سے کئے گئے ،موجودہ حکومت سلیکٹڈ ہے ،دھاندلی کے ذریعے وجود میں آئی ،اس حکومت کا مزید قائم رہنا پاکستان کے وجود کیلئے خطرے سے کم نہیں ۔

شہباز شریف نے کہا کہ ملک میں کرپشن کی بھرمار ہے ،سوا دوسال میں معیشت کی جو زبوں  حالی ہے ، قوم کے سامنے ہے ۔فیصلوں کا  پس منظر یہی ہے کہ موجودہ حکومت سلیکٹڈ ہے ۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ہم بندوق کے زور پر نہ سیاست کرتے ہیں اور نہ ہی احتجاج  کرتے ہیں  ، ہم نے ہمیشہ غیر جمہوری قوتوں کا جمہوری طریقوں سے مقابلہ کیا ہے ،شہزاد اکبر کو ووٹ دینے کا حق نہیں تھا  لیکن گنتی کے وقت وہ کھڑا تھا۔

بلاول بھٹو زرداری نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں سب کے سامنے دھاندلی ہوئی ،شہباز شریف کو اپوزیشن لیڈر ہونے کے ناطے بولنے کا حق حاصل تھا،ہم ماضی کی غلطیوں کو دہرانا نہیں چاہتے ۔اپوزیشن کی تمام جماعتیں آئین و قانون پر یقین رکھتی ہے ۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ اپوزیشن کا موقف جمہوری ہونا چاہئے ،مائنس فارمولے کا ذکر خود عمران خان نے کیا ،صحیح وقت پر صحیح فیصلے کریں گے  کہ کس وقت کہاں حملہ کرنا ہے ۔پہلے مولانا نے اکیلے تحریک شروع کی ،اب سب مل کر تحریک شروع کر رہے ہیں ،نواز شریف اور آصف زرداری پوری اے پی سی میں موجود رہے ۔پاکستان میں حقیقی جمہوریت ہمارا مقصد ہے ،امید ہے عوام ہمارا ساتھ دیں گے ۔

تازہ ترین ویڈیوز