اپوزیشن کا ایک بار پھر سینیٹ کا اجلاس فوری بلانے کا مطالبہ

اپوزیشن سینیٹ اجلاس فوری بلانے مطالبہ
۱۹ جولائی, ۲۰۱۹ ۵:۴۰ شام

 اسلام آباد (92 نیوز) اپوزیشن نے ایک بار پھر سینیٹ کا اجلاس فوری بلانے کا مطالبہ کر دیا۔ حاصل بزنجو کہتے ہیں ہمارے پاس ساٹھ سے زائد ارکان کی حمایت ہے ، تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوگی ۔

اپوزیشن نے چئیرمین سینیٹ کو جوابی خط میں کہا ہے آئین چیئرمین سینیٹ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لانے کی اجازت دیتا ہے ۔ آئین میں کوئی شق نہیں کہ قرارداد عدم اعتماد ، صدر کی جانب سے بلائے گئے اجلاس میں منظور کی جائے ۔ چئیرمین سینیٹ کی جانب سے طلب کیا گیا اجلاس بھی معمول کی مطابق ہو گا ۔

خط میں مزید کہا گیا کہ  نوٹس جاری ہونے کے بعد سینیٹ کا اجلاس سات روز سے زیادہ ملتوی نہیں کیا جا سکتا ۔ آئین کے مطابق اجلاس اس وقت تک ملتوی نہیں ہو گا جب تک تحریک نمٹا نہیں دی جاتی، یہ آئین کی خلاف ورزی ہے کہ چئیرمین سینیٹ اپنے معاملے پر خود کوئی خط لکھیں۔

اپوزیشن رہنما میر حاصل بزنجو نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ وہ ہارس ٹریڈنگ نہیں ہونے دیں گے، انھوں نے پیر کے روز 60 سے زائد سینیٹرز ہونے کا دعوی بھی کیا۔

پیپلزپارٹی کی رہنما شیری رحمان نے کہا اگر تاخیری حربے استعمال کیے گئے تو بدنیتی واضح ہو جائے گی۔ مولانا عبدالغفور حیدی کا کہنا تھا کہ تاخیری حربے اب کام نہیں آئیں گے۔

اپوزیشن رہنماوں کا کہنا تھا کہ ان کا چئیرمین سے نہیں حکومت سے جھگڑا ہے، اگر حکومت نے اجلاس نہ بلایا تو پھر آئندہ کی حکمت عملی طے کریں گے۔

تازہ ترین ویڈیوز