آل پارٹیز کانفرنس فیصلہ کن ہے، آج فیصلے نہیں کئے تو کب کرینگے، نوازشریف


وطن سے دور، جانتا ہوں ، عوام ، مشکلات کا شکار ، نوازشریف ، آل پارٹیز کانفرنس ، ویڈیو لنک ، خطاب ، اسلام آباد ، 92 نیوز
20 ستمبر, 2020 2:54 شام

اسلام آباد (92 نیوز) مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف نے کہا کہ آل پارٹیز کانفرنس فیصلہ کن ہے، آج فیصلے نہیں کئے تو کب کرینگے، بولے ملک بدامنی اور افراتفری کا گڑھ بن چکا ہے، بجلی و گیس کے بل اور اشیاء کی قیمتیں عوام پر بم گرا رہی ہیں، بےساکھیوں پر کھڑی نالائق حکومت نے ہر معاملے پر یوٹرن لیا، اب ملک کا نظام وہ چلائیں جنھیں عوام کی اکثریت ووٹ دے۔

نواز شریف نے آل پارٹیز کانفرنس سے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وطن سے دور ہوتے ہوئے بھی جانتا ہوں عوام کن مشکلات کا شکار ہیں، اے پی سی کو فیصلہ کن سمجھتا ہوں، ملک کو صحیح معنوں میں جمہوری ریاست بنانے کیلئے اپنی تاریخ پر نظر ڈالنی ہوگی۔ اس نااہل حکومت نے پاکستان کو کہاں سے کہاں پہنچا دیا ہے۔ پاکستان کی معیشت بالکل تباہ ہوچکی ہےـ 5.8 فیصد شرح ترقی سے آگے بڑھتا ہوا، پاکستان آج صفر سے بھی نیچے جا چکا، پاکستان افغانستان اور نیپال سے بھی نیچے آچکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ غریب اور متوسط گھرانوں کیلئے دو وقت کی روٹی مشکل ہوگئی۔ 2 سال میں ڈیڑھ کروڑ لوگ غربت کی سطح سے نیچے جا چکے۔ 1 کروڑ نوکریوں کا جھانسہ دینے والے روزگار چھین چکے ہیں۔

قائد مسلم لیگ ن سی پیک سخت کنفیوژن کا شکار ہے، 2 سال کی قلیل مدت میں قرضوں کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے ہیں۔ کوئی بھی بڑا ترقیاتی منصوبہ شروع نہیں کیا جا سکا۔ پاکستان معاشی طور پر مفلوج ہوچکا ہے۔ پاکستان میں ووٹ کو عزت نہ ملی تو ملک معاشی طور پر مفلوج ہی رہے گا۔ ایسے ممالک اپنے دفاع کے قابل بھی نہیں رہتے خاص طور پر اس وقت جب آپ کے دشمن کمزوریوں کا فادئہ اُٹھا رہے ہوں۔

اُن کا کہنا تھا کہ سیالکوٹ موٹروے نے دل دہلا دیا، حکومت کی تمام تر ہمدردیاں قوم کی بیٹی کے بجائے اپنے چہیتے پولیس افسر کیساتھ ہیں۔ پاکستان چھٹا بڑا ملک ہے پاکستان کی خارجہ پالیسی بنانے کا اختیار عوامی نمائندوں کے پاس ہونا چاہیے کھربوں کے نقصان، ہزاروں جانیں قربان کے باوجود کبھی ایف اے ٹی ایف کبھی کسی اور کٹہرے میں کھڑے شرمناک صفائیاں پیش کررہے ہوتے ہیں۔

میاں نواز شریف بولے کہ کٹھ پتلی پاکستانی حکومت دیکھ کر بھارت نے کشمیر کو اپنا حصہ بنا لیا۔ دنیا تو کیا اپنے دوستوں کی حمایت بھی نہ کرسکے، کیوں ہم عالمی تنہائی کا شکار ہوگئے؟، کیوں آج دنیا ہماری بات سننے کو تیار نہیں؟، شاہ محمود قریشی نے کس منصوبے کے تحت وہ بیان دیئے جس سے ہمارے بہترین دوست سعودی عرب کی دل شکنی ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو دیگر ممالک کیساتھ مل کر او آئی سی کو مضبوط کرنا چاہیے، پاکستان کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔ خارجہ پالیسی کو بچوں کا کھیل بنا کر رکھ دیا گیا۔ اس کانفرنس میں یوسف گیلانی، راجہ پرویز اشرف موجود ہیں تو وہ اچھی طرح جانتے ہیں کہ سول حکومت کے گر کس طرح شکنجے کس دیئے جاتے ہیں۔ ان کارروائیوں کی بھاری قیمت ریاست کو ادا کرنی پڑتی ہے۔ ایجنسیوں کے اہلکاروں پر مشتمل جے آئی ٹی بنی، پراپیگنڈا مشینوں کے ہاتھوں ہمیں غدار قرار دیا گیا۔

ن لیگ کے قائد کا کہنا تھا کہ سی پیک کے حوالے سے شی جن پنگ کا کردار قابل تعریف ہے۔ سی پیک منصوبہ حکومت کی نااہلی کی نذر ہورہا ہے سی پیک کیساتھ پشاور کی بی آرٹی جیسا سلوک ہورہا ہے۔ کئی ارب روپے غرق ہوگئے، آئے دن بسوں میں آگ لگ جاتی ہے۔

کہا کہ نیب کے کردار کا جائزہ لینا ضروری ہے، ہم نے کبھی نہیں سوچا تھا نیب اس حد تک گر سکتا ہے۔ نیب حکومتی آلہ کار بن چکا ہے، سینئر اہلکاروں کے گھناؤنے کردار فاش ہوچکے۔ چیئرمین نیب جاوید اقبال اپنے عہدے کا مذموم استعمال کرتے ہوئے پکڑا جاتا ہے۔ لیکن کوئی ایکشن نہیں ہوتا۔ شفافیے کے دعویدار عمران خان کے کان پر بھی کوئی جوں نہیں رینگتی۔ انشا اللہ بہت جلد اِن سب کا یوم حساب آئیگا۔

نیب انتہائی بدبودار ہوچکا، اپنا جواز کھوچکا، اپوزیشن کے لوگ اس کا نشانہ بنے ہوئے ہیں۔ اپنے گھر کی خواتین کیساتھ نیب کے دفتروں، عدالتوں میں رل رہے ہیں جو نیب سے بچے اس کو ایف آئی اے کے سپرد کردیا جاتا ہے، جو ایف آئی اے سے بچے وہ اینٹی نارکوٹکس کے سپرد کردیا جاتا ہے۔

نواز شریف بولے کہ سینٹ الیکشن کے کردار عاصم سلیم باجوہ کا نام بھی آتا ہے یہ وہی ہیں جن کے خاندان کی بے پناہ دولت اور دنیا میں پھیلے اثاثوں کی تفصیلات سامنے آچکی ہیں۔ ایس ای سی پی اور سرکاری ریکارڈ میں ردو بدل بھی کی گئی۔ اربوں کے اثاثے کہاں سے بن گئے یہ پوچھنے کی کسی کی مجال نہیں۔ نہ نیب حرکت میں آئی، نہ عدالت نے نوٹس لیا، نہ کوئی مانیٹرنگ جج بیٹھا نہ کوئی سزا ہوئی۔ بڑے بڑے دعوے کرنے والے عمران خان نے بھی اثاثوں کے ذرائع پوچھنے کی زحمت نہیں کی، ایمانداری کا سرٹیفیکیٹ دیدیا میڈیا پر ذکر تب ہوا جب جنرل عاصم باجوہ خود تردید کیلئے ٹی وی پر آئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کے انتہائی سنگین اسکینڈل سامنے آچکے، جس کا نقصان عوام کو ہوا۔ آٹا، چینی کے اسکینڈل سامنے آچکے، چینی 50 روپے کلو تھی، آج 100 روپے ہوچکی۔ عوام کے اربوں روپے لوٹ لیے گئے ملک کا حکمران کرپشن ختم کرنے کا ڈھنڈورا پیٹا ہے۔

تازہ ترین ویڈیوز