آزاد کشمیر سمیت ملک کے مختلف علاقوں میں ہولناک زلزلہ ، 23 افراد جاں بحق


اسلام آباد ‏ پنجاب ‏ خیبرپختونخوا ‏ زلزلے کے جھٹکے ‏92 نیوز خیبر پختونخوا ‏ لاہور پشاور راولپنڈی جھنگ چنیوٹ بنوں دیر بالا شمالی وزیرستان ‏ ہندوکش ریجن ‏ افغانستان ‏ تائیوان ‏ جیالوجیکل سروے ییلان
۲۴ ستمبر, ۲۰۱۹ ۴:۰۹ شام

مظفرآباد (92 نیوز) آزاد کشمیر سمیت ملک کے مختلف علاقوں میں ہولناک زلزلہ آیا۔ میرپور، کوٹلی، جہلم اور دیگر علاقوں میں کئی عمارتیں اور دیواریں گر گئیں۔

اسپتال ذرائع کے مطابق میر پور آزاد کشمیر میں 23 افراد جاں بحق اور زخمیوں کی تعداد 400 سے زائد ہو گئی۔

آزاد کشمیر، پنجاب اور خیبرپختونخوا کو خوفناک زلزلے نے ہلا کر رکھ دیا۔ میرپور آزاد کشمیر کے علاقے جاتلاں میں بڑے پیمانے پر تباہی مچ گئی۔ سڑکیں پھٹ گئیں، زمین میں دراڑیں پڑگئیں، کئی گاڑیاں اپر جہلم کینال میں جاگریں، بسیں الٹ گئیں، مسجد کے مینار سمیت کئی عمارتیں اور دیواریں گر گئیں۔

میرپورمیں بے نظیر اسپتال کا اولڈ بوائز ہاسٹل زمین بوس ہوگیا۔ جیل کی دیواروں کو نقصان پہنچا، کھمبے گر گئے، مواصلات کا نظام متاثر ہوا، بجلی بند ہو گئی۔ سڑکیں تباہ ہونےسےآمدورفت میں مشکلات کا سامنا ہے۔

منگلا پاورہاؤس کے تمام یونٹ بند کرنا پڑے جس سے 900 میگاواٹ بجلی سسٹم سے نکل گئی۔ نہر اپر جہلم میں منڈہ کے مقام پر شگاف پڑ گیا۔ پانی کھڑی شریف میں داخل ہو گیا۔

وزیراعظم آزاد کشمیر زلزلے کے وقت لاہور میں تھے،اطلاع ملنے پر فوری طور پر آزاد کشمیر پہنے۔ نائنٹی ٹو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے راجہ فاروق حیدر نے کہا نقصان کا اندازہ لگایا جارہا ہے۔ سب سے پہلی ترجیح بے گھر ہونے والے افراد کو چھت فراہم کرنا ہے۔

وزیر اطلاعات آزاد کشمیر مشتاق منہاس نے نائنٹی ٹو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا نہر میں ایک جگہ شگاف پڑا جسے پر کر لیا گیا۔ بجلی کا نظام متاثر ہوا، کچھ علاقوں میں خود بھی بجلی بند کی گئی، سپلائی جلد بحال کر دی جائے گی۔

ترجمان واپڈا کا کہنا ہے زلزلے سے منگلا ڈیم اور پاور ہاؤس کو نقصان نہیں پہنچا، تفصیلی جائزے کیلئے ڈیٹا اکٹھا کیا جارہا ہے۔ جھیل کا پانی گدلا ہو گیا، حفاظتی اقدامات کے پیش نظر پاور ہاؤس کی ٹربائنیں بند کر دی گئیں۔ زلزلے سے پہلے منگلا ڈیم سے 900 میگاواٹ بجلی پیدا کی جا رہی تھی۔

زلزلے کے باعث جہلم میں بھی ایک خاتون جاں بحق اور کئی افراد زخمی ہوگئے۔ لاہور ایئرپورٹ پر عملہ اور مسافر ٹرمینل سے باہرآگئے جس پر پروازیں منسوخ کرنا پڑیں۔ ٹرین ڈرائیوروں کو ہدایت کی گئی ہے کہ ٹریک متاثر ہونے کا خدشہ ہے اس لئے دینہ سے کھاریاں تک ٹرین کی رفتار کم رکھیں۔

تازہ ترین ویڈیوز