انتہا پسند ہندوؤں کا مسلم خاندان پر دھاوا، بہیمانہ تشددکا نشانہ ‏بنایا


انتہا پسند
24 مارچ, 2019 10:06 دن

نئی دہلی ( 92 نیوز) مودی کے بھارت  میں  مسلمان ہونا بھی  برداشت نہ ہو سکا، انتہا پسند ہندوؤں  نے مسلم خاندان پر دھاوا بول دیا ، نوجوانوں کو بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا اور پاکستان چلے جانے کو کہا۔

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی  خود کو  ملک کا چوکیدار اور اقلیتوں کا محافظ  کہتے ہیں جبکہ حقائق اس کے برعکس ہیں ۔مودی  سرکار  کے آشیرباد سے  انتہا پسند ہندو کھلے عام غنڈہ گردی کررہے ہیں اور انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں  ۔

اس کی تازہ مثال گڑ گاؤں کے علاقہ دھماسپور میں  رہائش پذیر مسلم نوجوانوں پر  بہیمانہ تشدد ہے جس کی ویڈیو  منظر عام پر آگئی ۔

متاثرہ گھر کے بچے کرکٹ کھیل رہے تھے کہ کچھ لوگ وہاں آئے اور کہا کہ ’پاکستان جاکر کرکٹ کھیلو‘۔دیکھتے ہی دیکھے  ہندو بلوائیوں نے   ہاکی اور پائپوں  سے انہیں مارنا پیٹنا شروع کردیا  او خواتین کو ہراساں کیا۔

صرف یہی نہیں  ملزمان گھر سے  نقدی اور قیمتی سامان بھی لوٹ کر فرار ہوگئے ۔

اپوزیشن جماعت کانگریس کے رہنما  راہول گاندھی نے واقعے  کی  شدید الفاظ میں مذمت کی ، انہوں نے کہا کہ  بی جے پی اور آر ایس سی  سیاسی طاقت کیلئے  تعصب  اور نفرت پھیلا رہی ہے۔ایسے واقعات کےخطرناک نتائج سامنےآسکتےہیں

تازہ ترین ویڈیوز