Saturday, April 17, 2021
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

الیکشن کمیشن کو دکھی بننے کی بالکل ضرورت نہیں، فواد چودھری

الیکشن کمیشن کو دکھی بننے کی بالکل ضرورت نہیں، فواد چودھری
March 5, 2021

اسلام آباد (92 نیوز) وفاقی وزیر فواد چودھری کہتے ہیں الیکشن کمیشن کو دکھی بننے کی بالکل ضرورت نہیں، وزیراعظم کے بیان پر پریس ریلیز جاری کرنا غیر مناسب لگ رہا ہے۔

اسلام آباد میں وفاقی وزیر فواد چودھری وزیر اطلاعات کے ہمراہ نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا، ادارے اپنی غیر جانبداری پریس ریلیز سے نہیں اقدامات سے ظاہر کرتے ہیں، ایک الیکشن جیت گئے اور ایک ہار گئے، یہی تو دھاندلی کا ثبوت ہے۔ قطعاً یہ نہیں کہہ رہا الیکشن کمیشن آئین سے بالا تر فیصلے کررہا ہے، ہم الیکشن کمیشن اور اداروں کا بے حد احترام کرتے ہیں۔ الیکشن کمیشن کی پریس ریلیز جاری ہوئی ہے، ادارے اپنے اقدامات پریس ریلیز سے نہیں جاری کرتے۔

انہوں نے کہا، وزیراعظم نے کہا الیکشن شفاف بنانے کی ذمے داری پوری نہیں ہوسکی، ہارس ٹریڈنگ نہیں رک سکی۔ ضروری ہے ایسا مکینزم بنائیں جس سے الیکشن میں دھاندلی رک سکے۔ شفاف انتخابات عمران خان اور پی ٹی آئی کی سیاست کا ستون رہے ہیں، ہم سے زیادہ الیکشن کمیشن کو مضبوط کوئی نہیں دیکھنا چاہتا، الیکشن کو ایسے اقدامات اٹھانے چاہئیں جس سے ان کی غیر جانبداری مسلمہ سامنے آئے۔

اُن کا کہنا تھا، مریم نواز کی تقریر ہے ہمارا ٹکٹ بکا، ویڈیو سے لیکر مریم نواز کی اسٹیٹمنٹ سب آپ کے سامنے ہے۔ ویڈیوز اور مریم نواز کی تقریر شواہد ہیں، آپ کو اسے دیکھنا تھا۔ الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کی ڈائریکشن کی بھی پرواہ نہیں کی، وزیراعظم کے بیان پر پریس ریلیز جاری کرنا غیر مناسب لگ رہا ہے، امید ہے الیکشن کمیشن اپنے مؤقف پر نظر ثانی کرے گا۔

وفاقی وزیر بولے کہ ہمارے 177 ارکان اسلام آباد آگئے ہیں، امید ہے پارلیمانی پارٹی اجلاس میں 179 ارکان شرکت کریں گے، اعتماد کے ووٹ کی کوئی قانونی ضرورت نہیں تھی۔ اپوزیشن تحریک عدم اعتماد لاتی تو لوگوں کو پورا کرنا ان کی ذمے داری ہوتی۔ عمران خان کو اس طرح کا چیلنج پہلی بار نہیں آیا،  تحریک انصاف اور اتحادی وزیراعظم کو اعتماد کا ووٹ بھرپور طریقے سے دیں گے۔

انہوں ںے کہا، ڈسکہ سے سینیٹ الیکشن تک کوتاہیاں ہوئی ہیں، الیکشن کمیشن کو ہماری معاونت چاہیے تو دیں گے، کل قومی اسمبلی عمران خان پر اعتماد کا اظہار کرے گی۔

ن لیگ اور پیپلزپارٹی نے ملک کی اخلاقیات کو نقصان پہنچایا، شبلی فراز

وزیراطلاعات شبلی فراز نے کہا، وزیراعظم اور حکومت کا زور تھا الیکشن شفاف ہوں۔ ن لیگ اور پیپلزپارٹی نے ملک کی اخلاقیات کو نقصان پہنچایا۔ انہوں نے اخلاقیات کو پیسے کا کلچر بنا دیا۔ نوازشریف اینڈ کمپنی نے پیسے اور غنڈہ گردی کی روایت شروع کی۔ وزیر اعظم نے اس ملک کے سب سے اہم مسئلہ کو اجاگر کیا۔ 1985ء سے اس ملک میں پیسے چل رہے ہیں، 85 سے نواز شریف جیسے لوگ اس سسٹم میں داخل ہوئے۔ غنڈہ گردی اور الیکشن میں رکاوٹیں کی بنیاد انھی لوگوں نے رکھی۔

انہوں نے کہا، پیسے کا استعمال معاشرے میں پھیلانے کا کریڈٹ ن لیگ اور پیپلزپارٹی کو جاتا ہے، ان کی سیاست کی بنیاد پیسہ ہے، جہاں ایمانداری انوکھا پن بن جائے انہوں نے وہ کلچر متعارف کرایا۔ اپوزیشن کے مفاد میں نہیں کہ الیکشن شفاف ہوں اور پیسے کا اثرو رسوخ نہ ہو۔ ایسی صورتحال بدنامی ایوان کی ہوتی ہے۔

شبلی فراز بولے کہ اِن کی ترجیحات مفادات اور اقتدار کا حصول ہے، ایک طرف ذاتی مفادات اور دوسری طرف ملک کے عوام کے مفادات ہیں۔ وزیراعظم نے عوام کے حقوق کیلئے علم اٹھایا ہوا ہے۔ دوسری طرف سیاہی کے اندھیرے کا علم پی ڈی ایم نے اٹھایا ہوا ہے۔ سینیٹ اور جنرل الیکشن کے بارے میں ہمارا بیانیہ کافی واضح ہوگیا ہے۔ سب کو پتہ چل گیا ہے کون کدھر کھڑا ہے۔

انہوں نے کہا، تحریک انصاف نے تو اپنے 20ارکان کو نکال دیا تھا،پی ڈی ایم نے کیا کیا تھا؟۔ ہم نے نیشنل اسمبلی میں ہارس ٹریڈنگ کے خلاف بل پیش کیا،  صدارتی ریفرنس لایا گیا، سپریم کورٹ میں بھی دائر کیا گیا، لیکن اپوزیشن نے اس بل کی مخالفت کی۔

اُن کا کہنا تھا، ہم سسٹم کو درست کرنے کی بات کررہے ہیں، جدوجہد اقتدار کی نہیں اس طبقے کیخلاف ہے جس نے ملک کو کھوکھلا کردیا ہے۔ ہم اس مرحلے سے بھی گزر جائیں گے، مشکلات آتی ہیں،اصل بات ثابت قدمی ہے۔ عمران خان سے ثابت قدم وزیراعظم ملک میں نہیں آیا۔

انہوں نے کہا، سارے الیکشن شفاف اور اوپن ہوں گے تو انگلیاں نہیں اٹھیں گی، اسی بات کیلئے ہماری جدوجہد تھی، ہے اور جاری رہے گی۔ ن لیگ نے نوٹ کو اپنے ٹکٹ سے تشبیہ دی ہے، پی ٹی آئی کا ٹکٹ ہاٹ آئٹم تھا اور ہے۔