Tuesday, April 13, 2021
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
٩٢ نیوز انگلش آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

آپریشن ردالفساد کے 4 سال مکمل ہو گئے ہیں، ڈی جی آئی ایس پی آر

آپریشن ردالفساد کے 4 سال مکمل ہو گئے ہیں، ڈی جی آئی ایس پی آر
February 22, 2021

راولپنڈی (92 نیوز) ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے آج آپریشن ردالفساد کے 4 سال مکمل ہو گئے ہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجرجنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ 22 فروری 2017 کو آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی سربراہی میں آپریشن ردالفساد کا آغاز کیا گیا۔ آپریشن کا دائرہ کار پورے ملک پر محیط تھا۔ ہر پاکستانی آپریشن ردالفساد کا حصہ ہے۔ یہ آپریشن دہشتگردوں اور انتہا پسندی کیخلاف شروع کیا گیا۔ آپریشن ردالفساد کے تحت ملک بھر میں 3 لاکھ 75 ہزار سے زائد آپریشن کیے گئے۔ سندھ میں ڈیڑھ لاکھ  سے زائد اور پنجاب میں 34 ہزار سے زائد انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کیے گئے۔ چار سال کے دوران خیبرپختونخوا میں 92 ہزار سے زائد اور بلوچستان میں 80 ہزار سے زائد انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کیے گئے۔ 2010سے 2017 تک میجر آپریشن کے تحت مختلف علاقوں کو کلیئر کرایا جاچکا تھا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا دہشتگردوں کی ملک کے طول و عرض میں پناہ کی کوشش پر آپریشن شروع کیا گیا۔ انٹیلی جنس ایجنسیوں نے انتھک محنت اور قربانیوں سے دہشتگرد نیٹ ورکس کو ختم کیا۔ ردالفساد ایسے وقت میں شروع کیا گیا جب دہشتگردوں نے بھاری نقصان اٹھانے کے بعد پاکستان کے طول و عرض میں پناہ لینے کی کوشش کی۔ دہشتگردوں نے پاکستان میں زندگی کو مفلوج کرنے کی ناکام کوشش کی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا ہے قبائلی اضلاع میں آپریشن کے تحت ڈی مائننگ کی کوششیں کی گئیں۔ قبائلی علاقوں کو قومی دھارے میں شامل کیا گیا۔ ڈی مائننگ کے دوران 2 سپاہی شہید اور 119 زخمی ہوئے۔ 48ہزار سے زائد مائنز ریکور کر چکے ہیں۔ قبائلی علاقوں میں آپریشن کو سپورٹ کرنے کیلئے چیک پوسٹیں قائم کی گئیں۔ اب چیک پوسٹوں میں 42 فیصد کمی آئی ہے۔ 4سال میں 37 ہزار سے زائد پولیس جوانوں کو بھی تربیت دی ہے۔ 3ہزار800 سے زائد لیویز اہلکاروں کی تربیت بھی کی۔ شدت پسندی اور دہشتگردی کے خاتمے کیلئے نیشنل ایکشن پلان کے تحت اقدامات کیے گئے۔ 717کیسز ملٹری کورٹ میں ریفر کیے گئے۔ 78سے زائد دہشتگرد تنظیموں اور دہشتگردوں کیخلاف ایکشن لیا گیا۔ دہشتگرد کے اثاثوں کو فریز کیا گیا اور ان کی نقل و حرکت پر پابندی لگائی گئی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کراچی میں امن و امان کی صورتحال بہت بہتر ہوئی۔ کراچی کرائم انڈیکس میں 106 نمبر پر آچکا ہے۔ یہ آپریشن رد الفساد کی کامیابی کا ایک اور منہ بولتا ثبوت ہے۔ پاکستان میں کھیلوں کے میدان آباد ہیں۔ گوادر، کے ٹو دنیا کی توجہ کا مرکز بنے ہوئے ہیں۔ کورونا ویکسی نیشن کا عمل جاری ہے۔ چین نے جو ویکسین گفٹ کی تھیں وہ حکومت کے حوالے کر دی گئی ہیں۔ ٹڈی دل کے خاتمے میں بھی سکیورٹی اداروں نے بھرپور کردار ادا کیا۔ انسداد پولیو مہم میں بھی سکیورٹی فراہم کی گئی۔ آپریشن ردالفساد کے ثمرات ہر جگہ نظر آرہے ہیں۔

 میجر جنرل بابر افتخار نے کہا اس مرتبہ یوم پاکستان پر بھرپور قومی جذبے کے ساتھ 23 مارچ کی پریڈ کا انعقاد ہو گا۔ پریڈ میں افواج پاکستان بھرپور طریقے سے شرکت کریں گی۔ عوام کے تعاون سے ہر چیلنج پر قابو پائیں گے۔ یوم پاکستان کا پیغام ہے ایک قوم ایک منزل۔